قاتل سافٹ ڈرنک سال میں کتنی جانیں لے جاتی ہے؟جدید تحقیق میں تہلکہ خیز انکشاف

قاتل سافٹ ڈرنک سال میں کتنی جانیں لے جاتی ہے؟جدید تحقیق میں تہلکہ خیز انکشاف
قاتل سافٹ ڈرنک سال میں کتنی جانیں لے جاتی ہے؟جدید تحقیق میں تہلکہ خیز انکشاف

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) شوگر اور سوڈے کے حامل مشروبات کے نقصانات کے متعلق ہم آپ کو مسلسل آگاہ کرتے آرہے ہیں۔ ایک نئی تحقیق میں ایسے مشروبات سے ہونے والی ہلاکتوں کے اعدادوشمار سے پردہ اٹھایا گیا ہے، آئیے آپ کو اس سے آگاہ کریں۔ 

ماہرین کا کہنا ہے کہ سافٹ ڈرنکس، فروٹ ڈرنکس، انرجی ڈرنکس اور آئس ٹی و دیگر ایسے ہی مشروبات سے دنیا بھر میں سالانہ 1لاکھ84ہزار لوگ موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ماہرین کہتے ہیں کہ ان مشروبات سے انسانی جسم کو ایک بھی فائدہ نہیں ملتاجبکہ نقصانات اس قدر ہیں کہ انسان کو طبعی عمر سے قبل ہی قبر میں دھکیل دیتے ہیں۔ تحقیق کے مطابق ان مشروبات میں موجود شوگر کی وافر مقدار کے باعث سالانہ 1لاکھ 33ہزار افراد ذیابیطس کے مرض میں مبتلا ہوکر موت کے گھاٹ اتر جاتے ہیں،45ہزارافراد ان مشروبات کے باعث دل کی بیماریوں اور 6ہزار 450افرادکینسر کا شکار ہو کر زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔سوڈا اور شوگر والے مشروبات کے باعث میکسیکو میں دنیا بھر میں سب سے زیادہ 30فیصد ہلاکتیں ہورہی ہیں۔ برطانیہ میں سالانہ 1ہزار 316افراد ان مشروبات کے باعث مر جاتے ہیں۔ جاپان میں ان مشروبات کے باعث ہلاکتوں کی شرح سب سے کم 1فیصد ہے۔ ماہرین نے دنیا بھر کی حکومتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ اپنے شہریوں کی روزمرہ خوراک سے ایسے مشروبات کو نکالنے کے لیے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے جائیں۔

ماہرغذائیات کواتھر ہاشیم کا کہنا ہے کہ کئی شواہد سے ان مشروبات کے ہماری صحت مضراثرات ثابت ہو رہے ہیں۔یہ نہ صرف صحت بلکہ دنیا کی معیشت پر بھی بار گراں ثابت ہو رہے ہیں۔ اب وقت آ گیا ہے کہ شوگر والے مشروبات بنانے والی کمپنیوں کو چاہیے کہ اپنی مصنوعات میں شوگر کی مقدار کم کر دیں۔

مزید : تعلیم و صحت