شیطان صفت انسانی باپ10 برس تک اپنی ہی بیٹی کو درندگی کا نشانہ بناتا رہا،سائنس نے عبرتناک انجام کو پہنچادیا

شیطان صفت انسانی باپ10 برس تک اپنی ہی بیٹی کو درندگی کا نشانہ بناتا رہا،سائنس ...
شیطان صفت انسانی باپ10 برس تک اپنی ہی بیٹی کو درندگی کا نشانہ بناتا رہا،سائنس نے عبرتناک انجام کو پہنچادیا

  

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک)افغانستان میں درندہ صفت شخص نے بربریت کی انتہا کر دی۔ اپنی ہی بیٹی کو 10سال تک زیادتی کا نشانہ بناتا رہا جس سے 2بچے بھی پیدا ہو گئے۔ لڑکی کی عمر اس وقت تقریباً 22سال ہے اور وہ اپنے ہی باپ کے 4سالہ اور ایک شیرخوار بچے کی ماں بن چکی ہے۔ 10سال جبر سہنے کے بعد لڑکی بالآخر عدالت پہنچ گئی اور عدالت نے بچوں اور لڑکی کے باپ کے ڈی این اے ٹیسٹ کروانے کا حکم دیا۔ڈی این اے ٹیسٹ امریکہ سے کروایا گیا جس میں باپ کا جرم ثابت ہو گیاجس پر عدالت نے اسے موت کی سزا سنا دی ہے۔تاہم ملزم تاحال اپنی بے گناہی پر مصر ہے اور اعلیٰ عدالت میں اپنی سزا کے خلاف اپیل کر چکا ہے۔ 

لڑکی کا کہنا تھا کہ میرا باپ مجھے مانع حمل ادویات استعمال کرواتا تھا اس کے باوجود ان 10سالوں میں میں کئی بار حاملہ ہوئی اور اسقاط حمل کروائے۔اپنے باپ کے خلاف میرے پاس کوئی ثبوت نہ تھا، میں جس کو بھی بتاتی وہ مجھے ہی قصوروار ٹھہراتا۔ پھر میں نے اسقاط حمل نہ کروانے اور بچوں کو جنم دینے کا فیصلہ کیاتاکہ میں انہیں عدالت میں بطور ثبوت پیش کر سکوں۔میں اپنے بچوں کے مستقبل کے حوالے سے پریشان ہوں، جب یہ بڑے ہو جائیں گے اور مجھ سے اپنے باپ کے بارے میں پوچھیں گے تو میں انہیں کیا جواب دوں گی۔

مزید : انسانی حقوق