پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ظلم کے مترادف ہے،وسیم اختر

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ظلم کے مترادف ہے،وسیم اختر

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پنجاب و پارلیمانی لیڈر پنجاب اسمبلی ڈاکٹر سید وسیم اختراورسیکرٹری جنرل نذیراحمد جنجوعہ نے اوگراکی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں ہوشربااضافے کی تجویزکی پُرزور مذمت کرتے کہاہے کہ یکم جولائی سے پٹرول 4روپے26پیسے فی لیٹر،ہائی آکٹین کی قیمت7روپے 30پیسے فی لیٹرتک اضافہ کرنا عوام کے ساتھ مزید ظلم کے مترادف ہوگا۔انہوں نے کہاکہ حکومت ایسے فیصلے نہ کرے جن سے عوام کی مشکلات میں پہلے سے زیادہ اضافہ ہوجائے مہنگائی،بے روزگاری اور لاقانونیت کے باعث مسائل کے انبار لگے ہوئے ہیں۔مزدورطبقہ حکمرانوں کے عاقبت نااندیش فیصلوں سے پس کررہ گیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ حکومت اپنے اللوں تللوں میں مصروف ہے جبکہ مزدور کی فلاح بہبود کیلئے کچھ نہیں کررہی۔کسپرسی کی زندگی گزارنے والامزدور طبقہ حکومتی ڈنگ ٹپاؤپالیسیوں سے سخت نالاں ہے۔سال 2013-14میں کم از کم اجرت10ہزار روپے ماہانہ مقرر کی گئی تھی جبکہ مالی سال2014-15میں یہ اجرت کم ازکم 12ہزار روپے مقررکی گئی ہے لیکن ای او بی آئی اب تک کم ازکم اجرت8ہزار ماہانہ کوتسلیم کیے ہوئے ہے۔ای او بی آئی نے پنشن میں اعلان کردہ اضافے کونہ صرف نظر انداز کیابلکہ کم از کم اجرت کے ماہانہ اطلاق کوبھی تسلیم کرنے سے گریزاں ہے۔انہوں نے کہاکہ حکمرانوں کی بے حسی، جاگیرداروں،سرمایہ دار وں، وڈیروں کی من مانیوں اور پارلیمنٹ کی بالادستی کوقبول کرنے کے عملاً انکارنے محنت کش طبقہ کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔پنشن کیلئے آنے والے ورکرکو8ماہ سے ایک سال تک انتظار کرنے کوکہاجاتاہے۔کبھی کہہ دیاجاتا ہے کہ آپ کے کاغذات مکمل نہیں یا آپ کی سروس پوری نہیں۔

۔۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔

۔۔

۔

۔۔

۔

اکثرکمپنیاں تقررنامے نہیں دیتیں ۔اگر خوش قسمتی سے کسی ورکرکوکوئی کمپنی لیٹرجاری کردے تویہ ورکرای اوبی آئی کا عملہ تسلیم کرنے سے انکارکردیتاہے۔جماعت اسلامی پنجاب کے رہنماؤں نے مزیدکہاکہ مزدوروں کے حقوق کے نام پر وجود میں آنے والی تنظیمیں بھی کچھ نہیں کررہی ہیں۔ہرسال سینکڑوں مزدور بے روزگاری اور فاقہ کشی سے خودکشیاں کرنے پر مجبورہیں مگر حکمرانوں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ملازمین کے ساتھ نارواسلوک اور مزدوروں کااستحصال کاسلسلہ بند ہوناچاہئے۔یہ ہمارے ملک وقوم کے روشن مستقبل کی ضمانت ہیں۔جماعت اسلامی ملک کی تعمیروترقی میں اپناخون پسینہ بہانے والوں کے مسائل کوہرسطح پر اجاگر کرتی آئی ہے اور آئندہ بھی کرتی رہے گی۔انہوں نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیاکہ وہ مزدوروں کودرپیش مشکلات کاازالہ کرے۔جب تک اس ملک میں مزدورطبقہ خوشحال نہیں ہوگا ملک ترقی نہیں کرسکتا۔ضرورت اس امر کی ہے کہ حکمران اپنے بنک بیلنس بھرنے کی بجائے عوام کے حقیقی خادم بن کر خدمت کریں۔پروٹوکول اور اقتدار کے مزے لوٹنے والوں کوعوامی مسائل صرف الیکشن کے دنوں میں دکھائی دیتے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -