تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن سمبڑیشن یال کے ترقیاتی کاموں میں گھپلے

تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن سمبڑیشن یال کے ترقیاتی کاموں میں گھپلے

  

لاہور(ارشد محمود گھمن) تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن سمبڑیال کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف۔ٹی ایم او ،ٹی او آراور ایڈمن آفیسر سمیت کئی عملہ کے ملوث پائے جانے کا امکان ۔ ٹی ایم او اسد شاہ اہم سیاسی شخصیت کے داماد ہونے کا دعویٰ کرنے لگا۔ سمبڑیال تا ڈگری کالج چوک نہر اپر چناب تا ائر پورٹ روڈ گرین بیلٹ کی خوبصورتی کے نام پر پودوں اور جنگلوں کو نصب کرنے کی مد میں بھی کروڑوں روپے کا حکومتی خزانے کو ٹیکا لگا دیا،دوسال قبل نصب شدہ کروڑوں روپے مالیت کے جنگلے سکریپ کی نذر کر دیے گئے۔جبکہ عملہ نے اعلیٰ حکام کے ساتھ مل کر کتے ،مچھر ،زہریلے کیڑوں اور ڈینگی کے نام پربھی سولہ لاکھ روپے نکلوا لیے۔ ڈی جی اینٹی کرپشن نے کرپشن میں ملوث افراد کے خلاف ڈائریکٹر گوجرانوالہ کو تحقیات و کا روائی کرنے کے احکامات صادر کر دیے۔تفصیلات کے مطابق درخواست گزار اصغر علی وغیرہ نے الزام عائد کیا ہے کہ دوسال قبل تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن سمبڑیال میں ٹی ایم اواسد حسین شاہ اور ایڈمن آفیسر اعجاز احمد ڈھلووغیرہ نے آپس میں ساز باز کر کے سمبڑیال سے ڈگری کالج نہر اپر چناب انٹرنیشنل ائر پورٹ چوک سے ائر پورٹ روڈ تک گرین بیلٹ کی خوبصورتی کیلئے تقریباً تین کروڑ روپے کی لاگت سے جنگلوں او ر پودوں کی تزئن وآرائش کی مد میں بغیر ٹینڈر جاری کیے اپنے کار خاص ٹھیکیدار کو ٹھیکہ دے کر کام کروایا۔جوکہ تقریباً ایک سال بعد اس کو سکریپ کی زینت کر کے نئے سرے سے اس کی خوبصورتی کیلئے دوبارہ پودوں اور جنگلوں پر پھر تقریباً دو کروڑ روپے کے اپنے کار خاص ٹھیکیدار کو نواز دیا۔جو کہ قومی خزانے کو اپنے فائدے اور کمیشن کی خاطر کر وڑوں کا ٹیکہ لگا دیا۔جس کے خلاف اہل علاقہ کے لوگوں نے شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے احتجاج کیا۔بعد ازاں اعلیٰ افسران کے ساتھ تعلق پائے جانے پر کوئی کاروائی بھی عمل میں نہ آسکی۔درخواست گزار نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ تمام ملوث افراد نے گذشتہ سال کیڑے مکوڑوں اور کتے مار مہم اور ڈینگی کے خاتمہ کے نام پر سولہ لاکھ روپے کا ووچر ڈال کر پیسے نکلوالیے۔جسے فرضی انٹری کے ساتھ تمام افراد نے اپنی جیبیں گرم کر لیں۔درخواست گزار نے ڈی جی اینٹی کرپشن کے نام درخواست میں تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کے اکاؤنٹس اور متعلقہ اخراجات کی مد میں نکلوائے جانے والے کروڑوں روپے کا آڈٹ اور تحقیقات کسی ایماندار آفیسر سے کروا کر قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے پر کرپشن کے تحت مقدمہ درج کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ جس پرڈی جی اینٹی کرپشن نے ڈائریکٹر گوجرانوالہ کو کار وائی کرنے کے احکامات صادر کیے۔جب اس کرپشن کے حوالے سے ٹی ایم او اسد شاہ سے موقف دریافت کرنے کیلئے رابطہ کیا گیاتو ان کا ہے میں ایک دیانتدار آفیسر ہوں اور مجھے اہم سیاسی شخصیت کے ایماپر تعینات کیا گیا ہے جو مجھے اپنا داماد سمجھتے ہیں۔اور میری ایمانداری کا سرٹیفیکیٹ ہیں۔مجھے کوئی فرق نہیں پڑتا ،ایسی درخواستیں اور انکوائریاں محض اخباری خبریں ،میری ملازمت کا حصہ رہی ہیں۔

مزید :

علاقائی -