چیف انجینئر سرگودھا ملک سلیم اریگیشن ڈیپارٹمنٹ کی انکوائری 4ماہ سے زیرالتوا

چیف انجینئر سرگودھا ملک سلیم اریگیشن ڈیپارٹمنٹ کی انکوائری 4ماہ سے زیرالتوا

لاہور(اقبال بھٹی) چیف انجینئر سرگودھا زون ملک سلیم اریگیشن ڈیپارٹمنٹ کی انکوائری گذشتہ 4ماہ سے زیر التوا ہے،جس کو سیکرٹری اریگیشن نے دیکھا تک نہیں،حالانکہ ملک سلیم چیف انجیئنرسرگودھا زون سیکرٹری اریگیشن کے اختیارات استعمال کر رہا ہے۔مورخہ 07-06-14کو محکمہ آبپاشی کی کینال ڈویژن بھکر چار کاموں کے ٹینڈر جاری کیے گئے،جن کی مالیت 24کروڑ روپے تھی۔ان کاموں کی نہ تو پرنٹ میڈیا میں تشہیر کی گئی اور نہ ہی اسے محکمہ کی ویب سائٹ پر دیا گیا۔یہ کام چیف انجینئر سرگودھا زون ملک سلیم کے من پسند ٹھیکیداروں کو الاٹ کر دیے گئے،جس سے محکمہ کو کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا۔23-2-15کو اس فراڈ کے خلاف وزیر اعلی ٰ شکایت سیل کو ایک درخواست وصول ہوئی ۔ڈائریکٹر شکایات سیل نے یہ درخواست چیف سیکرٹری کے توسط سے 26فروری کو سیکرٹری آبپاشی کو بھجوا دی گئی۔جو ابھی تک تعطل کا شکار ہے۔نمائندہ روزنامہ ’’پاکستان‘‘ کو جب اس شکایت سے آگہی ہوئی تو اس نے26جون کو سیکرٹری آبپاشی سے ان کا موقف لینے کیلئے ملاقات کی۔سیکرٹری نے کہا کہ اس درخواست میں ٹینڈرز کے ریٹ اور ریکارڈ تبدیل کرنے کی شکایت بھی ہے۔اور یہ ریکارڈ ہم نے فرانزک لیبارٹری میں بھجوادیا ہے ۔نمائندے کہ سوال پر کہ آپ لیبارٹری کے بجائے اپنا ریکارڈ چیک کیوں نہیں کرتے ،کیونکہ اصل ریکارڈ اور ٹینڈرز تو دفتر میں موجود ہیں۔سیکرٹری آبپاشی اس سوال کا کوئی تسلی بخش جواب نہ دے سکے،جب ان سے پوچھا گیا کہ ہماری تحقیق کے مطابق ملک سلیم نے بوگس ایمرجنسی کا نفاذ کیا ہے۔جس کا ان کے پاس کوئی اختیار نہیں ہے،قانون کے مطابق یہ اختیار تو صرف سیکرٹری آبپاشی کے پاس ہوتا ہے،تو کیا آپ نے ملک سلیم کو یہ اختیار تحریری طور پر ٹرانسفر کیا ہے؟تو اس بات کو بھی انہوں نے ’’سنی ان سنی‘‘ کردی۔گویا ان کے علم میں ہر بات ہے مگر وہ میڈیا کو بتانا نہیں چاہتے۔سیکرٹری آبپاشی نے جان چھڑانے کیلئے روزنامہ پاکستان میں چھپی خبر پر ڈپٹی سیکرٹری ایڈمن کو انکوائری کا حکم دیدیا۔انہوں نے کہا کہ جن کے پاس یہ دستاویزات ہیں وہ چھٹی پر ہے آپ پھر کسی دن آئیں،سیکرٹری کو کروڑوں روپے کے فراڈ کا علم تو ہے اور وہ انکوائری کے سلسلے میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔انکوائری نمٹانے کیلئے ٹائم فریم دینے سے بھی گریز کیا۔یہ انکوائری ضلع سرگودھا کی صرف ایک ڈویژن کے ٹینڈر کی ہے۔جبکہ سرگودھا زون کی 7ڈویژنز میں گذشتہ دوسالوں سے ملک سلیم نے ایسا ہی کیا ہے۔اس طرح فراڈ کی رقم اربوں روپے کی بنتی ہے۔محکمہ آبپاشی میں تمام افسران ایک مافیا کی طرح منظم طریقے سے کام کر رہے ہیں۔اگر آپ بے گناہ ہیں تو روزنامہ پاکستان کو اصل حقائق سے آگاہ کیا جائے۔

مزید : علاقائی