سائنسدانوں نے پھیپھڑوں کے کینسر کے خاتمے کی دوا ایجاد کر لی

سائنسدانوں نے پھیپھڑوں کے کینسر کے خاتمے کی دوا ایجاد کر لی
سائنسدانوں نے پھیپھڑوں کے کینسر کے خاتمے کی دوا ایجاد کر لی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) سائنسدان طب کی دنیا میں ایک اہم سنگ میل عبور کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ پھیپھڑوں کے کینسر میں مبتلا افراد کے لیے خوشخبری ہے کہ سائنسدانوں نے اس کینسر کے خاتمے کی دوا ایجاد کر لی ہے۔یہ ایک ویکسین ہے جو ہفتے میں 2بار لینی پڑے گی، یہ ویکسین جسم کی قوت مدافعت کو پھیپھڑوں کے کینسر کے خلاف ابھارے گی جس سے کینسر کے خلیات کا خاتمہ ہو جائے گا۔ اس دوا کے تجربات کئی سالوں سے جاری تھے۔ مریضوں پرکیے گئے تجربات سے ثابت ہوا ہے کہ ایک بار اس ویکسین سے علاج کرنے کے بعد کئی سال تک مریض میں اس کے اثرات موجود رہتے ہیں اور وہ مرض سے محفوظ رہتا ہے۔ ماہرین اس دوا کو کینسر کے مرض کے خلاف انقلابی قدم قرار دے رہے ہیں کیونکہ اس ایجاد کے بعد اب پھیپھڑے کے کینسر کے مریضوں کو آپریشن تکلیف سے نجات مل گئی ہے۔ویکسین کے ابتدائی مشاہدات سے نتیجہ اخذ کیا گیا ہے کہ اس سے کینسر کے خلاف لڑنے والے مریضوں کی جیت کے چانس دوگنا بڑھ جائیں گے۔ اس دوا کا نام Nivolumabہے اور امریکہ میں آج سے مریضوں کے لیے دستیاب ہے۔ جن مریضوں کا پھیپھڑوں کا کینسر زیادہ پھیل چکا ہے انہیں یہ ویکسین مفت فراہم کی جائے گی۔ باقی ممالک میں بھی پھیپھڑوں کے کینسر کے مریض جلد اس دوا سے مستفید ہو سکیں گے۔

مزید : علاقائی