یہ آدمی 23 برس سے مسلسل اپنا پیشاب پی رہا ہے، اب صحت کیسی ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

یہ آدمی 23 برس سے مسلسل اپنا پیشاب پی رہا ہے، اب صحت کیسی ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ ...
یہ آدمی 23 برس سے مسلسل اپنا پیشاب پی رہا ہے، اب صحت کیسی ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) پیشاب جیسی غلیظ شے کا ایک قطرہ بھی جسم سے چھو جانے پر طبیعت ابتر ہوجاتی ہے اور جب تک جسم کو اس غلاظت سے پاک نہ کرلیا جائے قرار نہیں آتا، لیکن اس چین شہری کی گمراہی کا اندازہ کیجئے کہ جو جسم سے خارج ہونے والے اس غلیظ مائع کو مسلسل 23 برس سے پی رہا ہے۔ یہ صاحب چین کی یورین تھیراپی ایسوسی ایشن کے چیف منیجنگ ڈائریکٹر ہیں جو اس شرمناک فعل پر شرمندہ ہونے کی بجائے اسے تمام بیماریوں کا علاج اور اپنی ’قابل رشک‘ صحت کی اصل وجہ قرار دیتے ہیں۔

اخبار چینگ ڈو اکنامک ڈیلی سے بات کرتے ہوئے اس معمر شخص کا کہنا تھا ”مجھے یہ کام کرتے ہوئے 23 سال ہوگئے ہیں، میں 48 سال کا تھا جب میں نے اپنا پیشاب پینا شروع کیا، یہ تمام بیماریوں کا علاج ہے مثلاً کمر کے مسائل، جوڑوں کے مسائل اور بصارت کے مسائل وغیرہ۔“ یہ شخص اعتراف کرتا ہے کہ اسے اب پیشاب پینے کی لت پڑچکی ہے، اگرچہ اسے اس بدعادت کی وجہ سے اپنے عزیز و اقارب کی سخت مخالفت اور حقارت کا بھی سامنا کرنا پڑا ہے۔ اس کی بیٹی کو جب اس کے بیہودہ شوق کا پتہ چلا تو اس نے شدید احتجاج کیا اور اس شخص سے مکمل طور پر لاتعلقی اختیار کرلی۔

دنیا کا پہلا مرد جس نے ایک اور مرد کو ’حاملہ‘ کردیا

پیشاب کو ہر بیماری کا علاج قرار دینے والے اس شخص کا کہنا ہے کہ وہ صبح 5 بجے اٹھتا ہے اور گزشتہ رات گھڑے میں بھرے گئے پانی کو صبح اُٹھ کر پی لیتا ہے۔ شام پانچ بجے کے بعد وہ اپنا پیشاب پینا شروع کردیتا ہے اور سونے سے پہلے تقریباً ایک لیٹر پیشاب پی چکا ہوتا ہے۔

اس عجیب و غریب شخص کا کہنا ہے کہ جب اس نے پیشاب پینے کا سلسلہ باقاعدگی سے شروع کیاتو محض تین ماہ بعد اس کی نظر اتنی اچھی ہوگئی کہ عینک لگانے کی ضرورت نہ رہی اور اس کے جوڑوں کا درد بھی تقریباً ختم ہوگیا۔ اس نے دوسروں کو بھی اس طریقہ علاج سے آگاہ کرنے کا سلسلہ شروع کردیا اور بعدازاں چائنہ یورین تھیراپی ایسوسی ایشن کی بنیاد رکھی، جس کا اندراج اب حکومت کی جانب سے شائع کی جانے والی ایسوسی ایشنز کی فہرست میں بھی ہوچکا ہے۔

بڑے میاں تو پیشاب نوشی کی تعریف کرتے تھکتے نہیں لیکن ڈاکٹروں کی رائے بالکل مختلف ہے۔ چینگ ڈو فرسٹ پیپلز ہسپتال سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر وانگ شیاﺅ ڈونگ نے پیشاب نوشی کو انسانی صحت کے لئے انتہائی مضر قرار دیا۔ ان کا کہنا تھاکہ قدرت نے انسانی صحت کے تحفظ کے لئے فاضل مادوں کو جسم سے خارج کرنے کا نظام بنایا ہے اور ان فاضل مادوں کو دوبارہ جسم میں لے جانا یقینا خطرناک فعل ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس