ڈسٹرکٹ بار بہاولنگر نے چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کے حکم پر ہڑتال ختم کر دی

ڈسٹرکٹ بار بہاولنگر نے چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کے حکم پر ہڑتال ختم کر دی

بہاولنگر(بیورورپورٹ)گزشتہ 18روز سے ڈسٹرکٹ بار بہاولنگر کی جانب سے کی جانیوالی ہڑتال چیف جسٹس ہائیکورٹ پنجاب لاہور سید منصور علی شاہ کے حکم پر ختم کر دی گئی اُنہوں نے پولیس اور وکلاء کے درمیان تمام معاملا ت کے متعلق جوڈیشل مقرر کر دیا ۔ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج (بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

بہاولپور رانا مسعود اختر انکوائری آفیسر مقرر کر دیے گئے جو پولیس اور وکلاء کے درمیان تمام معاملات کی انکوائری کر کے چیف جسٹس ہائیکورٹ پنجاب کو رپورٹ پیش کرینگے۔اسی بناء پر ڈسٹرکٹ بار بہاولنگر نے ہڑتال ختم کر تے ہوئے آج مورخہ یکم جولائی کو وکلاء عدالت میں پیش ہونگے اور گزشتہ کئی روز سے عدالت میں پیش ہونیوالے

سائلین کیلئے جودشواریاں پیش آ رہی تھیں وہ آج ختم ہو گئی ہیں۔ پولیس اور وکلاء کا جھگڑا وکیل کیطرف سے درج کر وائے گئے ایک مقدمے کو پولیس کی جانب سے خارج کر نے کی بناء پر تفتیشی آفیسر جو کسی اور مقدمے کے ملزمان کو عدالت میں پیش کرنے کیلئے گیا تو وکلاء کیجانب سے تشدد کرنے کی وجہ سے ہوا تھا۔ پولیس نے وکلاء کیخلاف مقدمہ درج کر لیا تھا اور مقدمہ میں وکلاء کے ایک نامزد ملزم کو گرفتار کر کے جوڈیشل بھیج دیا تھا۔ بعد ازاں جسکی ضمانت ہو گئی تھی۔اس روز سے وکلاء نے عدالتوں کا بائیکاٹ کر تے ہوئے مکمل طور پر ہڑتال کر دی تھی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر