کراچی ،بارش سے بجلی کا نظام ٹھپ ،سحرو افطار میں شہری پریشانی سے دو چار

کراچی ،بارش سے بجلی کا نظام ٹھپ ،سحرو افطار میں شہری پریشانی سے دو چار

کراچی ( اے این این )کراچی میں مون سون کی پہلی بارش سے آٹھ سو سے زائد فیڈر ٹرپ ہونے پر بجلی کا نظام ٹھپ ہو کر رہ گیا، متعدد علاقے اندھیرے میں ڈوب گئے اور شہریوں نے رات سڑکوں پر گزاری ،موسلا دھار بارش کے باعث سعدی ٹاؤن کے قریبی نالے میں طغیانی۔ تفصیلات کے مطابق شہر قائد میں کالی گھٹائیں آئیں پھر خوب برسیں ، موسم نے کروٹ لی ۔ شہریوں کے چہرے کھلے مگر زیادہ دیر خوشی سنبھال نہ سکے ۔ شہریوں کیلئے پے در پے مسائل کی برسات ہوگئی ۔ مون سون کی پہلی برسات نے ہر طرف پانی ہی پانی کر دیا ۔ وہیں کئی علاقوں میں بجلی اور پانی غائب ہوگئے ۔ ساون برسا تو جیسے کے الیکٹرک کیلئے امتحان بن گیا ۔ شہر کے 812 فیڈر ٹرپ کرگئے مگر کے الیکٹرک حکام کے دعووں اور غلط بیانی کا سلسلہ جاری رہا ۔ رات بھر گلستان جوہر ، فیڈرل بی ایریا ، ملیر ، لانڈھی ، کورنگی اور بلدیہ سمیت متعدد علاقے اندھیرے میں ڈوبے رہے ۔ طویل لوڈشیڈنگ سے تنگ شہری گھروں سے باہر نکلنے پر مجبور ہوگئے ۔ تیس فیصد شہر کو بجلی کی فراہمی معطل ہونے سے 26 کروڑ گیلن پانی بھی فراہم نہ ہو سکا ۔ لوگوں کو سحری کی تیاری میں بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ، گھروں میں پینے کیلئے پانی تک نہ رہا ۔ شہر کی 100سالہ تاریخ میں اتنی بڑی تعداد میں کبھی فیڈر ٹرپ نہیں ہوئے ۔ دوسری جانب کراچی میں مون سون کی بارشوں کے بعد سعدی ٹاؤن کے قریبی نالے میں طغیانی کے باعث سعدی گارڈن زیر آب آگیا ۔ کراچی میں بارشوں کے بعد سعدی ٹاؤن سے متصل نالے میں تغیانی کے باعث سعدی گارڈن زیر آب آگیا ۔ علاقہ مکینوں نے اپنی مدد آپ کے تحت نکاسی آب کیلئے انتظامات کئے ہیں ۔ تاہم ان کا کہنا ہے کہ بروقت انتظامیہ حرکت میں نہ آئی تو سیلاب کی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے ۔ کمشنر کراچی اعجاز خان کا کہنا ہے کہ وہ تو ابھی آئے ہیں، پچھلے دور میں کام نہیں ہوا جبکہ انہیں برساتی نالوں کی صفائی کے لیے چار روز پہلے ہی رقم ملی ہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول