عدالت نے وسیم اختر کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی

عدالت نے وسیم اختر کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی

کراچی(اسٹاف رپورٹر)انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے کراچی کے نامزد میئر اور متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما وسیم اختر کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے۔تفصیلات کے مطابق جمعرات کو کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں رینجرز کی جانب سے وسیم اختر کو بیرون ملک جانے سے روکے جانے کی درخواست کی سماعت ہوئی۔اس موقع پرمتحدہ کے رہنما وسیم اختر بھی عدالت میں موجود تھے۔رینجرزکے وکیل شیخ ساجد محبوب نے دوران سماعت کہاکہ ہمیں میڈیاکے ذریعے پتہ چلا کہ وسیم اختربیرون ملک جارہے ہیں، ہمارا موقف سنے بغیر وسیم کو اختر کو بیرون ملک جانے کی اجازت دی گئی۔قانونی طور پر وسیم اختر بیرون ملک نہیں جا سکتے ہیں۔رینجرزوکیل نے کہاکہ وسیم اختر متحدہ قومی موومنٹ کے اہم رہنما ہیں جن کے خلاف مختلف تھانوں میں درجن سے زیادہ کیس درج ہیں جن کی سماعت جاری ہے خدشہ ہے وسیم اختر بیرون ملک جانے کے بعد واپس نہیں آئیں گے۔اس موقع پر رینجرزکے وکیل نے عدالت سے استدعاکی کہ وسیم اختر ہائی پروفائل کیسز میں مطلوب ہیں لہٰذا ان کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے۔جس پر عدالت نے کہاکہ اگر رینجرز کو وسیم اختر کے بیرون ملک جانے پر اعتراض ہے تو وزارت داخلہ سے رجوع کریں۔ اس موقع پر وسیم اخترکے وکیل نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ اگر میرے موکل وسیم اختر کو بھاگنا ہوتا تو عدالت سے اجازت لینے کیوں آتے؟ وسیم اختر عدالت آئے ہیں وہ فرار ہونا نہیں چاہتے اور سب کو یاد رہنا چاہیے کہ رینجرز کے 90 روزہ نظر بندی کے اختیارات بھی ختم ہو چکے ہیں۔اس موقع پر وسیم اختر نے کہا جا رہا ہے کہ میں بھاگ جاؤں گا لیکن یہ تاثر بالکل غلط ہے۔میں ملک کے سب سے بڑے اور دنیاکے چھٹے بڑے شہرکانامزدمیئرہوں بھاگنے کاسن کرافسوس ہوا۔وسیم اختر نے کہا میں نامزد میئر اور منتخب یو سی چیئرمین ہوں،میں عدالت کا احترام کرتا ہوں اور جب بھی عدالت نے طلب کیا ساری مصروفیات ترک کرکے حاضر ہو اس لیے مجھ پر عدالت سے بھاگنے کا الزام سراسر غلط ہے ۔عدالت نے وسیم اختر کی جانب سے واپسی کی یقین دہانی کے بعد انہیں بیرون ملک جانے کی اجازت دیتے ہوئے رینجرز کی درخواست نمٹا دی

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر