بچوں کوصحیح تعلیم سے ہی قومی ترقی ممکن ہے ،سکندر میندھرو

بچوں کوصحیح تعلیم سے ہی قومی ترقی ممکن ہے ،سکندر میندھرو

کراچی(پ ر) صوبائی وزیر ماحولیات سکندر میندھرو نے کہا ہے ملک کی ترقی و خوشحالی کا دارومدارطلبہ کو صحیح تعلیم و تربیت کی فراہمی سے وابستہ ہے اور انھیں پوری امید ہے کہ غریب طبقہ سے تعلق رکھنے والے بچے جو کہ محمد علی جناح سیکنڈری اسکول میں مفت فراہم کی جا نے والی تعلیم انتہائی محنت و لگن سے حاصل کرہے ہیں آگے چل کر ان میں قائیدآعظم،ذوالفقار علی بھٹو اور شہید بے نظیر بھٹو جیسی قائیدانہ صلاحیت رکھنے والی لیڈرشپ پیدا ہوگی۔یہ بات انہوں نے گزشتہ شام محمد علی جناح سیکنڈری اسکول کراچی کے طلبہ میں یونیفارم اور جوتے تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔تقریب سے انسانی حقوق اورسماجی بہبود کی سرگرمیوں کے ممتاز رہنما انصار برنی، ایم اے جناح یونیورسٹی کراچی کے صدر پروفیسر ڈاکٹر زبیر شیخ اور اسکول کے پرنسپل غلام محمد نے بھی خطاب کیا۔سکندر میھیندہرونے کہا کہ جو بچے بڑی آسائیش اور سہولتوں کے ساتھ پڑھتے ہیں ان کے مقابلہ میں غریب گھرانوں کے بچے تمام تر مشکلات کے باوجود بہتر کارکردگی کا مظاہر کرتے ہیں اور وہ خود اس بات پر فخر کرتے ہیں کہ انکا تعلق ایک غریب گھرنے سے ہے۔انہوں نے بچوں پر زور دیا کہ یہ دنیا سب کے لئے ہے، پاکستان میں جو بھی وسائل موجود ہیں ان پر سب کا برابر کا حق ہے اور انھیں یہ بات یاد رکھنی چاہیے کہ امیری اور غریبی میں کوئی فرق نہیں ہوتا بات صرف سوچ اور فکرکی ہوتی ہے، انسان اپنے اعمال سے بڑا ہوتا ہے اور دولت سے کوئی چھوٹا بڑا نہیں ہوتا ہے۔ممتاز سماجی رہنماانصار برنی نے کہا کہ ہم عبادات اپنے رب کی خوشنودی کے لئے کرتے ہیں لیکن مسجد سے باہر نکل کر ہمیں اپنے اردگرد کے لوگوں کی فلاح کے لئے کچھ کرنا چاہیے کیونکہ بہتر انسان وہ ہوتا ہے جو دوسروں کے لئے سوچتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ محمد علی جناح یونیورسٹی کی انتظامیہ غریب طبقہ سے تعلق رکھنے والے بچوں کو مفت تعلیم کی سہولت فراہم کرکے ایک اچھا اور قابل تقلید کام کررہی ہے ۔ انہوں نے بچوں پر واضح کیا کہآج جو یونیفارم اور جوتے آپ میں تقسیم کئے گئے ہیں یہ آپکے لیئے ایک تحفے کی حیثیت رکھتے ہیں اور یہاں تعلیم حاصل کرنے والے بچوں کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ تعلیم مکمل کرکے اس قابل بنیں کہ وہ بھی دوسروں کو تحفے دے سکیں۔ڈاکٹر زبیر شیخ نے کہا کہ علم چھپانے کی چیز نہیں ہے اسے دوسروں تک منتقل کرتے رہنا چاہیے کیونکہ تعلیم حاصل کرکے ہی کسی فرد میں مثبت سوچ پیدا ہوتی ہے اسی لئے کہا جاتا ہے کہ جو علم دوسروں کو منتقل نہیں کرتا وہ دراصل بخیل ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ تعلیم کو عام کرنے کے سلسلے میں اپنی کوششوں کو جاری رکھتے ہوئے اب ہم ایک نائٹ شفٹ اسکول کھولنے پر بھی کام کررہے ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر