لندن کے میئر صادق خان نے مختصر کپڑوں میں اشتہارات پر پابندی لگادی

لندن کے میئر صادق خان نے مختصر کپڑوں میں اشتہارات پر پابندی لگادی
لندن کے میئر صادق خان نے مختصر کپڑوں میں اشتہارات پر پابندی لگادی

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک )برطانوی دارالحکومت لندن کے نومنتخب میئر صادق خان نے ایسا اعلان کیاہے جس کی بنا پر کچھ حلقوں نے ان پر اسلام پھیلانے کے الزامات عائد کردیئے۔ان کے اعلان کے بعداب ٹیوب سٹیشنز پر مختصر کپڑوں میں ملبوس دبلی پتلی ماڈلز اور سکس پیک ایبز کی نمائش کرتے ہوئے مردوں کے اشتہارات نہیں لگائے جائیں گے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

بی بی سی کے مطابق صادق خان کی جانب سے آج جمعہ کے روز سے لندن کے پبلک ٹرانسپورٹ نیٹ ورک یعنی ٹیوب سٹیشنوں اور بسوں پر ایسے اشتہارات کی نمائش پر پابندی عائد کردی گئی ہے جن میں انسانی جسم کی’غیر صحت مندانہ تصاویر‘ دکھائی گئی ہوں گی۔صادق خان نے اپنی انتخابی مہم کے دوران ایسے اشتہارات پر پابندی کے عزم کا اظہاربھی کیا تھا۔

صادق خان کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ اس کا مقصد خاص طور پر نوجوان لوگوں میں اپنے جسم سے متعلق اعتماد پیدا کرنا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ ’دو نوجوان لڑکیوں کے باپ کی حیثیت سے، میں اس قسم کے اشتہارات کے بارے میں تشویش مند ہوں جو لوگوں کو رسوا کرتے ہیں، خاص طور پر خواتین کو اور انھیں اپنے جسم پر شرمندہ کرتے ہیں۔ یہی وقت ہے کہ اس کا اختتام کیا جائے۔‘

لندن اس قسم کی پابندی کا اطلاق کرنے والا پہلا دارالحکومت ہے تاہم اس سے قبل ناورے کے تیسرے بڑے شہر ٹرونڈہیم میں بھی اس قسم کی پابندی متعارف کروائی جاچکی ہے۔ اشتہارات کے حوالے سے ہونے والے کئی سروے میں یہ امر بھی سامنے آیا ہے کہ زیادہ تر خواتین کے دبلی جسامت کا کسی کے اپنے کھانے پینے کی عادات پر بھی اثر ہوسکتا ہے اور ان میں کھانا نہ کھانے کی بیماری بھی ہوسکتی ہے۔

صحت کے شعبے سے منسلک افراد نے اس پابندی کو خوش آئند قرار دیا ہے۔

تاہم اس پابندی پر میئر صادق خان کو تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا ہے۔ کالم نگار فیونولا میرڈتھ نے لکھا کہ ’مجھے معاف کرنا صا(دق خان) میں اسے خواتین کی کامیابی نہیں سمجھتی۔‘کچھ لوگوں نے اس سے بھی بڑھ کر انھیں ’اسلام پھیلانے کی کوشش‘ کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ وہ اپنی مذہبی اقدار کے باعث ایسا کر رہے ہیں۔

اس کے جواب میں میئر صادق خان کے دفتر سے سادہ سا جواب دیا گیا: سب وے اور بسوں پر سفر کرنے والے کسی بھی اشتہار کی ناپسندیدگی پر صفحہ نہیں پلٹ سکتے یا سوئچ آف نہیں کر سکتے۔وہ کہتے ہیں کہ لندن کے تمام پبلک ٹرانسپورٹ نیٹ ورک استعمال کرنے والے صارفین کا خیال رکھنے کا ’ہمیں اپنا فرض نبھانا ہے‘۔

مزید : ڈیلی بائیٹس