سیلاب ہر سال ملکی معیشت کو اربوں ڈالر کا نقصان پہنچاتا ہے‘ محمد ناصر حمید خان

سیلاب ہر سال ملکی معیشت کو اربوں ڈالر کا نقصان پہنچاتا ہے‘ محمد ناصر حمید ...

  



لاہور(کامرس رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے قائم مقام صدر محمد ناصر حمید خان نے حکومت ، بالخصوص نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی پر زور دیا ہے کہ وہ قبل از وقت فلڈ مینجمنٹ پلان تیار کرے تاکہ شدید سیلاب سے ہونے والی تباہی کی شدت کو حتی المقدور حد تک کم کیا جاسکے۔لاہور چیمبر کے قائم مقام صدر نے کہا کہ سیلاب ہر سال ملکی معیشت کو اربوں ڈالر کا نقصان پہنچاتا ہے، سینکڑوں قیمتی جانیں ضائع ہوتی ہیں جبکہ ہزاروں افراد کے مال مویشی اور فصلیں سیلاب کی نذر ہوجاتی ہیں۔ قبل از وقت فلڈ مینجمنٹ پلان مرتب کرکے ہولناک تباہی سے بچا جاسکتا ہے۔ انہوں نے سیلاب سے بچاؤ کے لیے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ترقی یافتہ ممالک یہ ٹیکنالوجی انتہائی کامیابی سے استعمال کررہے ہیں، عارضی رکاوٹوں کے ذریعے سیلاب یا شدید بارشوں کے پانی کا رخ موڑ دیا جاتا ہے جس سے وہ علاقے بھاری نقصان سے بچ جاتے ہیں لیکن پاکستان میں کبھی ایسی ٹیکنالوجی استعمال کرنے پر غور نہیں کیا گیا حالانکہ یہاں بھی یہ ٹیکنالوجی رہائشی اور کمرشل علاقوں میں تباہی کو روکنے میں اہم کردار ادا کرسکتی ہیں جہاں شدید بارشوں کا پانی دکانوں، گوداموں اور انڈسٹریل یونٹس میں داخل ہوکر تجارتی اشیاء اور مشینری برباد کردیتا ہے۔ محمد ناصر حمید خان نے کہا کہ پاکستان میں سیلابی اور بارشوں کا پانی روکنے کے لیے صرف ریت سے بھرے بیگ عارضی رکاوٹ کے طور پر استعمال ہوتے ہیں۔

جو بالکل فائدہ مند نہیں، اس کے برعکس ترقی یافتہ ممالک میں استعمال ہونے والی عارضی رکاوٹیں نہ صرف سیلابی پانی روکنے میں بہت زیادہ موثر ہیں بلکہ انہیں دوبارہ استعمال کے لیے محفوظ بھی کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کو اس سلسلے میں فوری اقدامات اٹھانا اور حکومت کو سیلاب سے تباہی روکنے کے لیے فنڈز میں اضافہ کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے پانچ سالوں کے دوران سیلابوں کی وجہ سے قومی معیشت کو مجموعی طور پر 45ارب ڈالر سے زائد کا نقصان ہوا، اگر جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جاتا تو یہ نقصان خاصی حد تک کم کیا جاسکتا تھا۔

مزید : کامرس


loading...