”نذر ونیاز پوری نہ کرنے والوں پر کیا گزر سکتی ہے“یہ بھی جان لیں کہ اسلام کا اس بارے میں حکم کیا ہے

”نذر ونیاز پوری نہ کرنے والوں پر کیا گزر سکتی ہے“یہ بھی جان لیں کہ اسلام کا ...

  



لاہور(نظام الدولہ)نذر ونیاز کا عہد کرنا اور اسکو پورا نہ کرنا بھی مصائب میں مبتلا کردیتا ہے۔روحانی معالجین اس بارے میں کہتے ہیں کہ عام طور انسان سمجھتا ہے کہ اس نے کوئی ایسی حرکت یا جرم نہیں کیا ہوتا لیکن پھر بھی اس پر مصیبتیں ٹوٹ پڑتی ہیں ،وہ بیمار رہنے لگتا ہے۔جو کام کرتا ہے اس میں برکت نہیں ہوتی۔اسکا یہ مطلب نہیں کہ اس پر جادو کیا گیا ہوتا ہے بلکہ وہ بدعہدی کی سزا بھگت رہا ہوتا ہے۔ اسکی ایک وجہ یہ بھی ہوتی ہے کہ لوگ اپنے کاموں کے لئے اللہ سے عہد کرتے ہیں کہ یہ مرادپوری ہوتووہ یہ نذر نیاز کریں گے۔لیکن مراد پوری ہونے کے بعد وہ بھول جاتے ہیں ۔تاہم خلاف شرع جو بھی نذر ونیاز ہوگی اسکی ممانعت کی گئی ہے ۔نذر نیاز صرف زندوں پر ہی نہیں وفات پاجانے والوں کی بھی پوری کرنے کا حکم ہے۔موطا امام مالکؓ میں نذر نیاز پر حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہما سے روایت مذکورہے کہ سعد بن عبادہؓ نے پوچھا یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم میری ماں مر گئی اور اس پر ایک نذر واجب تھی اس نے ادا نہیں کی ۔آپﷺ نے فرمایا تو ادا کرو اس کی طرف سے۔

لہذا ہر مسلمان کو نذر نیاز کا عہد کرتے ہوئے اسکو پورا کرنا چاہئے اور شریعت کے دائرے سے باہر نہیں نکلنا چاہئے۔ بصورت دیگر اسکو عوارض و مسائل لاحق ہونے کا خدشہ رہتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...