نیسپاک کے افسروں اور ملازمین کا 40روز سے جاری احتجاج ختم

نیسپاک کے افسروں اور ملازمین کا 40روز سے جاری احتجاج ختم

  



لاہور(کامرس رپورٹر)نیسپاک کے افسران اور ملازمین نے 40 روز سے جاری احتجاج ختم کر دیا ۔ نیسپاک کے جی ایم و نیپوا کے جنرل سیکرٹری سہیل مجید کی دفتر آمد کے موقع پر ان کا پرتباک استقبال کیا گیاجبکہ پھول کی پتیاں نچھاور اورڈھولک کی تھاپ پربھنگڑے ڈالے گئے۔واضح رہے کہ نیسپاک کے افسران اور ملازمین اینٹی کرپشن کی جانب سے اورنج ٹرین کیس میں سہیل مجید کی ناجائز گرفتاری پر گزشتہ چالیس روز سے سراپا احتجاج بنے ہوئے تھے افسران اور ملازمین ہاتھوں پرسیاہ پٹیاں باندھ کر اورنج ٹرین سمیت دیگر منصوبوں پر کام کر رہے تھے ۔ جی ایم جیو ٹیک سہیل مجید جب ضمانت پر رہائی کے بعد دفتر آئے تو ان کا افسران اور ملازمین کی جانب سے استقبال کیا گیا ۔افسران و ملازمین کا موقف تھا کہ نیسپاک نے گزشتہ سال مارچ میں ایل ڈی اے جو اورنج ٹرین منصوبے کا مین کنسلٹنٹ ہے کو اپنی رپورٹ میں بتایا تھا کہ چند پائلز کی گہرائی کم رہ گئی ہے جس پر ایل ڈی اے کی ہدایت پر ہی نیسپاک نے سپورٹنگ پائلز کے لئے ریوائز پی سی ون تیا رکرکے ایل ڈی اے کو دیا جس پر اس وقت کے ٹھکیدار نے کام بھی شروع کر دیا بعد ازاں د س ماہ بعد رواں سال مارچ میں اسی بات پر اینٹی کرپشن کی جانب سے مقدمہ درج کر لیا گیا ۔ ملازمین کے مطابق اینٹی کرپشن کی جانب سے درج مقدمہ میں ایل ڈی اے کے بھی افسران کے نام ہیں لیکن صرف انتقامی کارروائی کے تحت نیسپاک کے افسر کو گرفتار کیا گیا جبکہ ایل ڈی اے کے افسران اپنی ڈیوٹیوں پر کام کر رہے ہیں ۔

مزید : صفحہ آخر