چیئر مین ایس ای سی پی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کے سامنے پیش ، مطلوبہ ریکارڈ حوالے کر دیا

چیئر مین ایس ای سی پی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کے سامنے پیش ، مطلوبہ ریکارڈ ...

  



اسلام آباد(خصوصی رپورٹ) سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کے چیئر مین ظفر الحق حجازی اپنے ادارے کے دیگر افسران سمیت پاناما پیپرز کیس کی تحقیقات کرنے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) کے سامنے پیش ہوئے اور انہیں تمام مطلوبہ ریکارڈ فراہم کردیا۔ایس ای سی پی کے چیئرمین کے علاوہ ایگزیکٹو ڈائریکٹر اور دیگر 5 اعلیٰ افسران بھی آج جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوئے۔ایس ای سی پی کے افسران نے شریف خاندان کے کارروبار کے حوالے سے جے آئی ٹی کو مطلوب ریکارڈ بھی جے آئی ٹی کے حوالے کردیا۔ذرائع کے مطابق پیش کئے گئے ریکارڈ میں مریم نواز، حسین نواز اور حسن نواز کے اثاثوں کی تفصیلات کے علاوہ چوہدری شوگر ملز کا ریکارڈ بھی شامل ے۔ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ ایس ای سی پی حکام سے جے آئی ٹی نے کئی گھنٹوں تک شریف خاندان کے کاروباری ریکارڈ میں مبینہ ردو بدل کے بارے میں بھی پوچھ گچھ کی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ جے آئی ٹی تحقیقات کے آخری مراحل میں داخل ہوگئی ہے جبکہ جے آئی ٹی شریف خاندان کے افراد سے حتمی بیانات لینے کے بعد رپورٹ مرتب کرے گی۔ایس ای سی پی کے سربراہ نے اپنے دیگر افسران کے ہمراہ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کو شریف خاندان کی ملکیتی چوہدری شوگر ملز کیخلاف سال 2011 میں شروع ہونے والی تحقیقاتی رپورٹ اور دستاویزات پیش کیں اور بتایا کہ یہ تحقیقات سال 2013 میں بند کردی گئی تھیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ایس ای سی پی کے افسران نے تفتیش کے دوران جے آئی ٹی کو بتایا کہ چوہدری شوگر ملز کے خلاف تحقیقات روک دینے کا معاملہ مین شیٹ پر نہیں لایا گیا تھا۔

چیئرمین ایس ای سی پی

مزید : صفحہ اول


loading...