جمشید دستی پر جیل میں تشدد ‘ حکومت فسطائی ہتھکنڈوں پر اتر آئی ‘ ڈاکٹر وسیم اختر

جمشید دستی پر جیل میں تشدد ‘ حکومت فسطائی ہتھکنڈوں پر اتر آئی ‘ ڈاکٹر وسیم ...

  



ملتان (سٹی رپورٹر)جماعت اسلامی پنجاب کے سابق امیر وصوبائی پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر سید وسیم اختر نے رکن قومی اسمبلی جمشید دستی پر جیل میں وحشیانہ تشدد اور سرگودھا جیل میں منتقلی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے کہا کہ حکومت فسطائی ہتھکنڈوں پر اُتر آئی ہے فسطائیت کی انتہا کردی ہے انتقام لینے کی (بقیہ نمبر59صفحہ12پر )

آگ میں حکومت کے غیر قانونی اقدامات انہائی قابل مذمت ہیں اگر حکومت ہی غیر قانونی اقدامات کرے گی تو پھر عوام سے قانون پر عمل در آمد کی توقع کیسے کی جاسکتی ہے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ کہ پانا مہ کیس اور کرپشن کی تحقیقات نے حکمرانوں کو بو کھلاہٹ کا شکار کردیا ہے اُن کو اپنا چل چلاؤ نظر آرہا ہے اسی لئے جے آئی ٹی پر بلا جواز تنقید کی جارہی ہے اور متنازعہ بنانے کی کوشش کی جارہی ہے حکومت اپنے مقاصد میں ناکام رہے گی ۔ کرپٹ لوگوں کو سزا مل کر رہے گی ۔ پوری قوم جے آئی ٹی کے ساتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ رحیم یار خان میں جماعت اسلامی پاکستان کے سیکر ٹری جنرل لیاقت بلوچ کی پریس کانفرنس میں پولیس کی جانب سے رکاوٹیں ڈالنا قابل افسوس اور قابل مذمت ہے ۔انہوں نے کہا کہ رحیم یار خان کی ضلعی انتظامیہ اور پو لیس شاہ سے زیادہ شاہ کی وفادار مت بنے اپنی حد میں رہ کر کام کریں ۔ جمشید دستی کو فوری طور پر رہا کیا جائے، جھوٹے مقدمات واپس لئے جائیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...