وفاقی اور صوبائی حکومت کراچی کو لاوارث نہ سمجھیں ،رضا ہارون

وفاقی اور صوبائی حکومت کراچی کو لاوارث نہ سمجھیں ،رضا ہارون

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاک سر زمین پارٹی کے سیکر یٹری جنرل رضا ہارون نے کہا ہے کہ وزیراعظم پاکستان ، گورنرسندھ اور وزیراعلی سندھ کراچی شہر جو پاکستا ن کا معاشی حب ہے ،اسے لاوارث نہ سمجھیں۔ کراچی کو آفت زدہ علاقہ قرار دے کر شہریوں کی داد رسی میں اپنا کردار ادا کریں ۔بلدیاتی قیادت مکمل طور پر نااہل اور فرائض کی انجام دہی میں قطعی طور پر ناکام ہو چکی ہے۔ سندھ حکومت اور کراچی کی شہری حکومت نے بارشوں کو کراچی کے شہریوں کیلئے بدترین تباہ کاری میں تبدیل کر دیا ہے۔پی ایس پی کی جانب سے حالیہ بارشوں کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والے افراد خصوصا معصوم بچوں کے لواحقین سے دلی تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو پاکستان ہاس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر وسیم آفتاب اور دیگر بھی موجود تھے۔ رضا ہارون نے کہا کہ بارشیں باران رحمت ہوا کرتی ہیں لیکن سندھ حکومت اور کراچی کی شہری حکومت نے بارشوں کو کراچی کے شہریوں کیلئے بدترین تباہ کاری میں تبدیل کر دیا ہے۔ اس کی بنیادی وجہ مون سون کے سیزن سے قبل پیشگی پلاننگ کر کے برساتی نالوں کی صفائی نہ کرنا، جگہ جگہ کچرے کے ڈھیروں کو نہ اٹھانا ہے ۔انہوں کہ شہر کا کوئی علاقہ ایسا نہیں ہے جہاں بارش کے بعد پانی کھڑا نہ ہو، تمام اضلاع میں حالت ابتر ہے مین شاہراہوں سمیت گلیوں اور گھروں تک میں پانی داخل ہو گیا۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ سندھ اسمبلی اور بلدیاتی ایوان میں بیٹھی تمام ہی سیاسی جماعتیں عوام کو ریلیف پہنچانے میں ناکام رہی ہیں۔ کراچی میں گزشتہ روز ہونے والی بارش20 سے 30 ملی میٹر تک ریکارڈ کی گئی جو اتنی زیادہ نہیں کہ اس کیلئے انتظامات نہیں کئے جا سکتے تھے۔ ماضی میں اس شہر میں حالات تب ہی قدرے خراب ہوئے ہیں جب 80 سے90 ملی میٹر تک بارش ریکارڈ کی گئی ۔ لیکن انتظامی طور پر سندھ حکومت اور شہری حکومت نے کوئی اقدامات یا پلاننگ نہیں کہ تھی لہذا عوام کے سامنے ان کا پول کھل کر سامنے آ گیا۔ بارش شروع ہوتے ہی تمام منتخب نمائندے غائب ہو گئے اور رات گئے تک عوام کی داد رسی کرنے ولا کوئی نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ ایسے وقت میں کے الیکٹرک نے ہمیشہ کی طرح عوام کو پھر دھوکا دیا اور بیشتر علاقوں میں بجلی بیس سے چالیس گھنٹے گزر جانے کے باوجود نہ آسکی۔ اس دوران حالیہ ترقیاتی کاموں کا بھانڈا بھی پھوٹ پڑا اور یونیورسٹی روڈ سمیت، شاہ فیصل، نیشنل ہائی وے، عیسی نگری ، ملت کالونی میں سڑک کے بڑے حصے زمین میں دھنس گئے جس کے باعث بیشترعلاقوں سے لوگوں نے نقل مکانی شروع کر دی ہے۔ میئر تو اپنا ہونا چاہئے سے زیادہ اہم میئر مشکل وقت میں اپنوں کے درمیان ہونا چاہئے تھا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...