آر ٹی او افسران کی چشم پوشی، حکومت کو محاصل کی مد میں کروڑوں کا نقصان

آر ٹی او افسران کی چشم پوشی، حکومت کو محاصل کی مد میں کروڑوں کا نقصان

  



ملتان(نیوز رپورٹر) ریجنل ٹیکس آفس (آر ٹی او) ان لینڈ ریونیو ملتان کے افسران اور پرائیویٹ سکولز ، کالجز مالکان کی ملی بھگت کا (بقیہ نمبر37صفحہ12پر )

شا حسانہ 1923پرائیویٹ سکولوں میں سے صرف 250 ٹیکس نیٹ میں جبکہ 76پرائیویٹ کالجز میں صرف 10کالجز نے ریٹرن جمع کرائے ہیں آر ٹی او حکام کی سست روی کے باعث پرائیویٹ سکولز اور کالجز ایڈوانس ٹیکس کی قسطیں جمع کرانے سے بھی گریزاں ہیں ملتان شہر میں موجود صرف تین سکول ایڈوانس ٹیکس کی قسطیں جمع کراتے ہیں۔ جبکہ قواعد کے مطابق جن تدریسی اداروں کی آمد 5لاکھ روپے تک ہے ان پر ایڈوانس ٹیکس کی قسطوں کی ادائیگی لازمی ہے۔ لیکن آر ٹی او کے افسران کی چشم پوشی حکومتی محاصل کو کروڑوں کا نقصان پہنچارہی ہے۔ با وثوق ذرائع کے مطابق ایف بی آر حکام کی جانب سے عائد کی جانیوالی پابندیوں کی وجہ سے فیلڈ فارمیشن آفیسرز براہ راس ٹیکس گزاروں سے رابطہ کرنے کی بجائے کورئیر سروس کے ذریعے نوٹسز ارسال کررہے ہیں جن پر حکومتی اخراجات اٹھنے کے باوجود ٹیکس گزاروں کی جانب سے جواب ندارد ہے علاوہ ازیں ایف بی آر کے قواعد کے مطابق تمام پرائیوٹ تدریسی ادارے ود ہولڈنگ ایجنٹس بھی ہیں لیکن یہ پرائیویٹ ادارے بلڈنگوں کے کرائے کی ادائیگی پر ود ہولڈنگ ٹیکس کی کٹوتی بھی نہیں کررہے جو ود ہولڈنگ ٹیکس کی وصولی پر مامور افسران کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...