جمشید دستی کی گرفتاری کیخلاف شہر شہر احتجاجی مظاہرے، ریلیا، فوری رہائی کا حکم

جمشید دستی کی گرفتاری کیخلاف شہر شہر احتجاجی مظاہرے، ریلیا، فوری رہائی کا ...

  



ملتان،مظفرگڑھ، پیرجہانیاں،چوک مکول، لودھراں،ڈیرہ غازی خان،خان پور،عالی والا، شاہجمال (سٹی رپورٹر،نمائندگان)پاکستان عوامی راج پارٹی کے مرکزی صدر اور رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کی گرفتاری اور سرگودھا جیل میں منتقلی کیلئے ملتان سمیت جنوبی پنجاب بھر میں احتجاج کا سلسلہ گزشتہ روز بھی جاری رہا جس میں حکومت کیخلاف احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں،ملتان سے سٹی رپورٹر کے مطابق وسیب جگاؤ صوبہ بناؤ مہم کی سربراہ و سرائیکستان ڈیموکریٹک شعبہ خواتین کی صدر عابدہ بخاری کے زیراہتمام عوامی راج پارٹی کے سربراہ و رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کی گرفتاری اور جیل میں بہیمانہ تشدد کے خلاف ملتان پریس کلب کے سامنے احتجاجی بھوک ہڑتالی کیمپ لگایا گیا جس میں پی ٹی آئی کے ایم این اے ملک عامر ڈوگرنے اظہار یکجہتی کیاجبکہ مختلف سیاسی جماعتوں کے نمائندوں و سرائیکی رہنماؤں نے شرکت کی بھوک ہڑتالی کیمپ لگایا گیا اس موقع پر پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی ملک عامر ڈوگر نے بھوک ہڑتالی کیمپ کے شرکاء کو جوس پلا کرہڑتال ختم کی کیمپ سے خطاب کرتے ہو ئے عابدہ بخاری نے کہا کہ جمشید دستی پر جو ظلم روا رکھا جا رہا ہے اس کی مثال مارشل لاء کے دور میں بھی نہیں ملتی انہوں نے جمشید دستی کے خاندان خصوصاً ان کی والدہ اور کینسر کے مرض میں مبتلا مریضہ بہن سے اظہار یکجہتی کرتے ہو ئے کہا کہ اگر خداانخواستہ جمشید دستی کو کچھ ہوا تو اس کی ذمہ داری تخت لاہور کے حکمرانوں پر عائد ہو گی انہوں نے کہا کہ ہم تخت لاہور سے آزادی چاہتے ہیں اور سرائیکی صوبہ کے قیام کی جدوجہد جاری رکھیں گے علامتی بھوک ہڑتالی کیمپ میں ایم این اے ملک عامر ڈوگر، ظہور دھریجہ، مطلوب بخاری، جاوید حسین چنڑ ایڈووکیٹ،صباء فیصل، غلام مصطفی چوہان ایڈووکیٹ، مظہر عباس کات، چوہدری انور، عنائیت اللہ مشرقی، اختر گیلانی، افضال احمد ،مختار لنگاہ، ندیم لاشاری، خالد ورک، عابد سیال، ظفر ڈھڈی، خالد جاوید، عبد الرزاق، اشرف ، عابد بھٹی ،شاہد محمود انصاری، حافظٖ اعجاز ، شاہانہ شانی، آصف غوری، نبیلہ بٹ، آصفہ سلیم ملک، اجالا لنگاہ، سوجھلا مشرقی، غزل غازی، شمیم، طاہرہ، فوزیہ آصف، سمیعہ، سبین گل، مسرت اکرم، سومل مشرقی، گلزار شبیر، سائرہ زیدی، ودیگر خواتین و حضرات سمیت راہ گیروں نے بھی شرکت کی اس موقع پر مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے علامتی بھوک ہڑتالی کیمپ کے شرکاء کو پھولوں کے ہار بھی پہنائے۔علاوہ ازیں سرائیکستان نوجوان تحریک نے گزشتہ روز پل شوالہ سوتری وٹ چوک پر جمشید دستی کی گرفتاری اور پاراچنار میں ہونے والی دہشت گردی کے خلاف بھرپور احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ مظاہرہ میں چوک بند کر کے تخت لاہو ر اور دہشت گردی کے خلاف بھرپور نعرے بازی کی مظاہرین نے شرم کرو۔ حیا کرو جمشید دستی کو رہا کرو ۔ نواز شریف مردہ باد، شہباز شریف مردہ باد ، رانا ثناء اللہ مردہ باد ، صوبائی وزیر جیل احمد یار ہنجرا مردہ باد، دہشت گردی مردہ باد، پارا چنار کے شہدا کے قاتلوں کو فوراً گرفتار کر کے پھانسی دو کے فلک شگاف نعرے لگائے۔ مظاہرے کی قیادت چئیر مین مہر مظہر عباس کات ، ظہور احمد دھریجہ ، غلام عباس بلوچ ،حاجی طاہر بلوچ نمبردار ، عابدہ حسین بخاری ، مہر اقبال ترگڑ، خرم شہزاد ، مطلوب بخاری اور صبا فیصل نے کی۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مظہر کات ، حاجی طاہر بلوچ، ظہور دھریجہ اور عابدہ بخاری نے کہا کہ ہم تخت لاہور کی ، غنڈہ گردی اور دہشت گردی کی بھرپور مذمت اور جمشید دستی پر بنائے گئے نا جائز مقدمات کو فوراً ختم کرکے ان کی رہائی کا بھرپور مطالبہ کرتے ہیں ، انہوں نے آرمی چیف اور چیف جسٹس سے مطالبہ کیا کہ وہ غریب مزدور سرائیکی MNAجمشید دستی کے خلاف تخت لاہور کے ظلم و ستم کا فوراً نوٹس لیں اور ان کی رہائی کو یقینی بنائیں آخر میں شہداء بہاولپور اور شہداء پارا چنار کے لیے دعا مغفرت کی گئی مظاہرے میں مہر فضیل ہراج، چوہدری فیصل، مہر بلال ترگڑ، خرم لشاری، سمیت کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔مظفرگڑھ سے نامہ نگار کے مطابق پاکستان عوامی راج کے مرکزی رہنماء محمد وکیل موسیٰ کی زیر قیادت ضلعی سیکرٹریٹ کے سامنے جمشید دستی کی رہائی کے لئے احتجاجی مظاہرہ کیا۔دریں اثناء متحدہ قومی موومنٹ کے مرکزی رہنماء سید غلام علی بخاری،لیگل ونگ کے رہنماء سید رحمت علی ایڈووکیٹ اور عبدالمجید کاروانی نے جمشید دستی کی گرفتاری اور ان پر جیل میں تشدد کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نواز لیگ نے جمہوری دور میں بھی آمریت کی یاد تازہ کر دی ہے۔علاوہ ازیں پنجاب ریجنل یونین آف جرنلسٹ کے زیر اہتمام جمشید دستی کی رہائی کے لئے احتجاجی ریلی صوبائی ایڈیشنل جنرل سیکرٹری رضوان الحسن قریشی کے زیر قیادت نکالی گئی جس میں صحافیوں نے بھر پور شرکت کی اور حکومت کی طرف سے انتقامی کاروائی کی مذمت کی۔پیرجہانیاں سے نمائندہ پاکستان اور چوک مکول سے نامہ نگار کے مطابآمظفرگڑھ میں کچہری چوک سے پریس کلب تک احتجاجی ریلی نکالی گئی اور بعدازاں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیاگیا، احتجاجی مظاہرے میں صحافیوں، وکلاء اور شہریوں نے کثیرتعداد میں شرکت کی.احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے پریس کلب کے صدر اے بی مجاہد، جنرل سیکرٹری ڈسٹرکٹ بار مظفرگڑھ بلال مستوئی ایڈووکیٹ ودیگر مقررین کا کہنا تھا جمشیددستی کیخلاف حکومت کی انتقامی کاروائی قابل مزمت ہے.اس موقع پر مظاہرین نے حکومت کیخلاف اور جمشیددستی کی رہائی کے لیے نعرے بازی بھی کی. لودھراں سے نمائندہ پاکستان کے مطابق عوامی راج پارٹی کے مرکزی صدر اور ممبر قومی اسمبلی جمشید دستی کی رہائی اور حکومتی رویوں کے خلاف لودھراں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا ،جس میں پاکستان عوامی راج پرٹی کے رہنماؤں ، پاکستان عوامی تحریک ، نیشنل فرنٹ پاکستان اور عام شہریوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔عوام راج پارٹی کے مرکزی رہنما رانا اظہر اتیرا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چیف جسٹس آف پاکستان اس واقع کا نوٹس لیں اور جمشید دستی کو فی الفور رہائی دلوائیں ۔ عام شہری کی حیثیت سے طفیل ٹھاکر ایڈووکیٹ نے کہا کہ حکومت اس واقع کی غیر جانبدار تحقیق کرے ۔ عوامی تحریک کے رہنما مہر شعبان ورک نے کہا کہ جن لوگوں پر 302دفعات کے مقدمات ہیں وہ لوگ تو حکومت میں بیٹھے ہیں اور دوسری طرف ایک شریف آدمی کے خلاف جھوٹے مقدمات قائم کیے گئے ہیں ۔ نیشنل فرنٹ پاکستان کے رہنما پروفیسر وحید کمال نے کہا کہ جمشید دستی کو فی الفور رہا کیا جائے ورنہ ہم اسلام آباد بھی احتجاج کریں گے ۔ محمود اسلم کھوکھر ضلعی رہنما عوامی راج پارٹی بہاولپور نے کہا کہ ہم حکمرانوں کو کہتے ہیں کہ وہ جمشید دستی کو فی الفور رہا کریں ورنہ یہ ظلم ان کو لے ڈوبے گا ۔قبل ازیں عوامی راج پارٹی کے رہنماؤں و دیگر افراد نے سانحہ احمد پور ، سانحہ پارا چنا ، سانحہ کراچی میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لیے فاتحہ خوانی کی ۔ڈیرہ غازی خان سے نمائندہ خصوصی کے مطابق پاکستان سرائیکی قومی اتحاد کے زیرِ اہتمام ریلی نکالی گئی جو پل ڈاٹ سے کالج چوک اورہسپتال چوک سے ہوتی ہوئی ٹریفک چوک پر اختتام پذیر ہوئی پاکستان سرائیکی قومی اتحاد کے سربراہ ریٹائرڈکرنل نواب عبدالجبار عباسی نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جمشید دستی غریبوں کے حقوق کی خاطر کال کوٹھری میں بند ہیں میاں برادران نے انتقامی کاروائیوں کے تحت اسے گرفتا ر کرایاجمشید دستی کو فوراًرہا کیا جائے ورنہ احتجاج کا دائرہ کاروسیع کیا جائے گا، اس موقع پر مرکزی جنرل سیکرٹری حاجی نذیر احمد کٹپال ،مرکزی وائس چیئرمین پرویزمغل ،ضلعی صدر سید عامر مشہدی ،سید طاہر مشہدی ،مقصود لغاری ،ملک ہاشم بھٹہ ،بلال گھوٹیا،قاری عبدالحمید کھر،امجد شاہ،سردار عاشق صدقانی ،جمیل علیانی ،مشتاق کچھیلا،عنصر شاہ ،شیخ محمد اسماعیل نے خطاب کیا ریلی میں کثیر تعداد میں کارکنا ن نے شرکت کی۔خان پور سے نمائندہ خصوصی کے مطابق رکن قومی اسمبلی جمشید دشتی کی رہائی کے مطالبہ کیلئے پاکستان عوامی راج پارٹی کے زیر اہتمام پریس کلب خان پور کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔مظاہرین کی قیادت عوامی راج پارٹی کے ضلعی صدر اسماعیل بلوچ اور جنونی پنجاب کے ترجمان عمران ساگر کررہے تھے۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ جمشید دشتی غریب اور محروم طبقات کی آواز ہے جسکی وجہ سے انہیں جیل کی سلاخوں میں بیہمانہ تشدد کا نشانہ بناکر انہیں محروم طبقات کا ساتھ دینے کی سزا دی جارہی ہے۔عالیوالا سے نامہ نگار کے مطابق سرائیکستان قومی مومنٹ ڈویژنل عہدیداروں نے سرائیکی وسیب کے حقائق پر بات کرنے والے لیڈر جمشید دستی کے حق میں شدید احتجاج کیا اور مطالبات کئے کہ جمشید دستی کے ساتھ ناجائز جو مقدمے ہوئے ان کا فوری طور پر نوٹس لیا جائے۔ ڈویژن جنرل سیکرٹری مشتاق فرید کچھیلا نے کہا۔ پنجاب حکومت 50اور 60 سال سرائیکی وسیب پر ظلم کرتی آرہی ہے۔ مقصود حمد لغاری نے کہا جمشید دستی کے ساتھ جو رویہ حکومت نے کیا ہوا ہے ،یوں محسوس ہوتا ہے جسے سرائیکی خطہ انڈیا میں ہے ،ہم مطالبہ کرتے ہیں ۔چیف جسٹس فوری طو رپر نوٹس لیکر جھوٹے مقدمے خارج کیے جائیں۔ سابق چےئرمین خان محمد خان کھوسہ نے اپنے بیان میں کہا مظلوم اور غریب عوام کی آواز بلند کرنے کی سزا ملی ہے۔ سرائیکی قومومنٹ کے عہدیداران نے احتجاج کرتے ہوئے خالد محمود بھٹی، محمد جمیل علیانی، ریاض حسین گبول، نعیم خان کھوسہ ، محمد ہاشم رضا ماچھی، عبدالرحیم کھوسہ، فدا حسین کچھیلا، سرائیکی شاعر ملک حسین انجم، ریاض حسین ببر، عبدالمالک، مصطفی اختر، صادق کچھیلا، محمد جعفر لغاری، سرائیکی فوک سنگر عطا اللہ لغاری، جاوید لاشاری ،جاسم لاشاری، عبدالمجید ہبتانی ، جان محمد کھوسہ، غلام حسن وڈانی اور کثیر لوگوں نے احتجاج میں شرکت کی ۔شاہ جمال سے نمائندہ پاکستان کے مطابق عوامی راج پارٹی کے مرکزی راہنما ملک فاروق حیدر اعوان ،ملک مجاہد بھا بھہ،ملک عامر کوریہ مک فیاض والوٹ وائس چیئر مین،الطاف خان چانڈیہ کونسلر،ڈاکٹر جمشید قریشی اور عبدالرزاق کنیرا کی قیادت میں مدنی چوک (ملانوالا) سے ہزاروں خواتین و افراد پر مشتمل پر امن احتجاجی جلوس نکا لا گیا خطاب کرتے ہوئے ملک فاروق حیدر اعوان اور دیگر مقررین نے کہا مویشیوں کیلیئے ڈنگہ نالہ کھولنے کے جرم میں غریب عوام کے ایم این اے جمشید احمد دستی پر دہشت گردی کی دفعات اور دوران پیشی اپنے کارکنان سے گفتگو کر نے کو جسارت قرار دیکر اشتعال انگیزی پھیلانے کے جرم میں بیڑیاں،ہتھکڑیاں،بچھو،سانپ،گھسیٹ گھسیٹ کر تشدد اور بھوکا پیاسا رکھنا جیسے ہتھکنڈے استعمال کیئے جارہے ہیں اس دوران حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی اور جمشید دستی کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا گیا،جلوس چوک احمد موہانہ سے ہو تا ہوا مین بازار سے گزر کر خان گڑھ بس سٹینڈ پر اختتام پذیر ہو گیااس موقع پر ملک اسلم سابق کونسلر،بشیر احمد برڑا نمبر دار ،ملک سجاد کالرو،ملک ارشد کالرو،ملک ا نور اعوان،اعظم وریا،سرفراز میرانی،سید عامر شاہ،میاں عابد نوناری،اختر لاشاری،ارشاد حسین،ملک جعفر کوریہ،آصف جبرا،علی عاربی،شاہ نواز میرانی،شاہد اقبال لاشاری، نواب خان کانجو،ساجد کانجو،ملک فاروق فضل عاربی،عارف عاربی،آصف پرہار ندیم بلہ،ذیشان بلہ،فیاض سندیلہ،نعیم شاہ سمیت ہزاروں خواتین اور افراد شریک تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...