دنیا کے وہ 10 ظالمانہ کھیل جن میں جانوروں کا استعمال ہوتا ہے

دنیا کے وہ 10 ظالمانہ کھیل جن میں جانوروں کا استعمال ہوتا ہے
دنیا کے وہ 10 ظالمانہ کھیل جن میں جانوروں کا استعمال ہوتا ہے

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) کھیل تفریح کا ذریعہ ہیں اور یہ دل و دماغ کیساتھ ساتھ جسمانی صحت کیلئے بھی بہت ضروری ہیں۔ یہ بڑی ہولناک بات ہے کہ مہذب معاشرے کے انسان اپنی تفریح کیلئے کھیلوں کے نام پر جانوروں کیساتھ انتہائی ظالمانہ سلوک کرتے ہیں۔ ذیل میں 10 کھیلوں کے بارے میں بتایا جا رہا ہے جن میں جانوروں کیساتھ انتہائی ظالمانہ سلوک کیا جاتا ہے۔

بل فائٹنگ

یہ خونی کھیل جانوروں کے حقوق کی لڑائی کرنے والوں کی جانب سے احتجاج کی سب سے زیادہ وجہ بنا ہے۔ خوش قسمتی سے، احتجاجی مظاہروں کا اثر ہوا اور اب ہر گزرتے دن کیساتھ اس ظالمانہ کھیل میں کمی دیکھنے میں آ رہی ہے۔

مرغوں کی لڑائی

دنیا کے کئی حصوں میں مرغوں کی لڑائی اب بھی کروائی جاتی ہے۔ لڑائی میں حصہ لینے والے مرغوں کو انتہائی برے حالات میں رکھا جاتا ہے اور خوفناک سلوک کیا جاتا ہے تاکہ وہ غصیلے اور لڑاکے بن جائیں۔ مرغوں کو لڑائی سے پہلے بھوکا بھی رکھا جاتا ہے تاکہ وہ مزید خونخواہ ہو جائیں۔

کتوں کی لڑائی

مرغوں کی لڑائی کی طرح، کتوں کی لڑائی بھی دنیا کے کئی علاقوں میں پسندیدہ کھیل ہے اور انسان نے اپنی تفریح کے لالچ میں انسان دوست جانور کو بھی انتہائی خونخواہ بنا دیا ہے۔

سرکس

سرکس جانوروں کیلئے قید کا ماحول بناتی ہے جنہیں ان کی مرضی کیخلاف قید میں رکھ کر عجیب و غریب اور انوکھے کرتب سکھائے جاتے ہیں۔سرکس میں کرتب دکھانے والے جانوروں کو ٹریننگ کے دوران چابک اور لوہے کی سلاخوں سے مارا جاتا اور کنڈے کے استعمال کے علاوہ بجلی کے جھٹکے بھی لگائے جاتے ہیں۔

خرگوش پکڑنا

خوش قسمتی سے اس کھیل کو مکمل طور پر غیر قانونی بنا دیا گیا جس میں ایک کتے کو خرگوش پکڑنے کیلئے چھوڑ دیا جاتا تھا اورپھر دونوں کے درمیان ہونے والی دوڑ بڑے شوق سے دیکھی جاتی۔ اب اگر کسی کو جانوروں کا ایک دوسرے کے پیچھے بھاگنا پسند ہے تو وہ جانوروں کا کوئی بھی چینل دیکھ سکتا ہے۔

لومڑی کا شکار

برطانیہ میں اس کھیل کے دوران لومڑیوں کو پکڑا جاتا تھا اور انہیں مار دیا جاتا تھا۔ دوسری جانب ایک خوفناک کتے یا دوسرے جانور کو لومڑی کے زیر زمین بل کے باہر کھڑا کر دیا جاتا تاہم اس کھیل کا زیادہ لطف لوگ لومڑی کے پیچھے خونخواہ کتے چھوڑ کر اٹھاتے ہیں۔

ریچھ کا تماشا

ریچھوں کو قید کر کے انہیں لڑنے، ڈانس کرنے، سائیکل چلانے اور دیگر کام کرنے سکھائے جاتے ہیں تاکہ وہ تماشا کر کے لوگوں کو خوش کر سکیں۔ اس کے علاوہ ریچھ کو باندھ کر اس پر تربیت یافتہ کتے بھی چھوڑے جاتے ہیں جو جانوروں پر تشدد کا ایک اور طریقہ ہے۔

جانوروں کی دوڑ

کوئی شخص یہ کہہ سکتا ہے کہ ریس ظالمانہ اقدام نہیں ہے اور اس میں حصہ لینے والے جانوروں کا مکمل خیال رکھا جاتا ہے۔ تاہم گرے ہاﺅنڈز (تازی کتے) اور دوڑ لگانے والے گھوڑے بعض اوقات انتہائی تکلیف سے دوچار ہو جاتے ہیں اور پھر انہیں یا تو مار دیا جاتا ہے یا مذبحہ خانوں میں بیچ دیا جاتا ہے، یا پھر تجربات کیلئے مختص کر دیا جاتا ہے۔

روڈیو رائیڈنگ

یہ طریقہ کھیل اب بھی عام رائج ہے تاہم اس کھیل میں جانور پر ہونے والے ظلم کے باعث اسے روکنے کیلئے کئی ضابطہ قانون بنائے جا چکے ہیں۔

اورنگوتان باکسنگ

یہ عجیب و غریب طریقہ کھیل تھائی لینڈ میں رائج ہے جس میں چیمپینزیز کو باکسنگ کا لباس اور گلوز پہنا کر رنگ میں اتار دیا جاتا ہے اور پھر لوگ ان کی لڑائی سے محظوظ ہوتے ہیں۔

مزید : کھیل


loading...