ترقیاتی منصوبوں پر 635ارب روپے خرچ کر کے صوبے میں ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہوگا,شہبازشریف

ترقیاتی منصوبوں پر 635ارب روپے خرچ کر کے صوبے میں ترقی اور خوشحالی کے نئے دور ...
 ترقیاتی منصوبوں پر 635ارب روپے خرچ کر کے صوبے میں ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہوگا,شہبازشریف

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت نے رواں مالی سال 2017-18ء کیلئے صوبے کی تاریخ کا سب سے بڑا ترقیاتی پروگرام دیا ہے ،رواں مالی سال ترقیاتی منصوبوں پر 635ارب روپے خرچ کیے جائیں گے اوریہ پاکستان میں کسی بھی صوبے کی تاریخ کا سب سے بڑا اوربے مثال ترقیاتی پروگرام ہے ،اس ترقیاتی پروگرام کا حجم گزشتہ برس کے ترقیاتی پروگرام سے 15فیصد زیادہ ہے اور اس تاریخ ساز سالانہ ترقیاتی پروگرام سے عملدر آمد سے صوبے میں ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہوگااورترقیاتی پروگرام کے تحت منصوبوں کی تکمیل سے عوام کا طرز زندگی بدلے گا۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے ان خیالات کا اظہار منتخب نمائندوں سے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کاکہنا ہے کہ سماجی شعبہ کی پائیدار بنیادوں پر ترقی ہماری اولین ترجیح ہے فروغ تعلیم کیلئے رواں مالی سال 345ارب روپے کے ریکارڈ فنڈ رکھے گئے ہیں ۔تعلیم ہی ترقی و خوشحالی اورکامیابی کا زینہ ہے ۔پنجاب حکومت نے قوم کے نونہالوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کیلئے بے مثال پروگرام شرو ع کررکھے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ قومی یکجہتی کو مضبوط کرنے کیلئے تعلیمی پروگراموں میں دوسرے صوبوں کے بچے اور بچیوں کوبھی شامل کیاگیا ہے ۔زیور تعلیم پروگرام کے تحت پسماندہ اضلاع میں پانچ لاکھ بچیاں تعلیم سے آراستہ ہورہی ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے پروگراموں کے ذریعے 25لاکھ سے زائد طلباء و طالبات کو تعلیم کی روشنی سے ہمکنا رکیا جاچکا ہے ۔صوبے بھر میں نئے تعلیمی ادارے ،کالجز اوریونیورسٹیاں قائم کی جارہی ہیں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ صحت کے شعبہ میں بہترین سہولیات کی فراہمی بھی ہماری سرفہرست ترجیح ہے ۔رواں سال صحت عامہ کے منصوبوں کیلئے 263ارب 22کروڑ روپے رکھے گئے ہیں ۔ پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے بڑے پروگرام کا آغاز جنوبی پنجاب کی 37تحصیلوں سے کیا جارہاہے اوراس پروگرام پر عملدر آمد سے کروڑوں عوام کو پینے کا صاف پانی میسر آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ زراعت کو ہماری معیشت میں کلیدی حیثیت حاصل ہے ۔ زراعت اور لائیو سٹاک کے فروغ کیلئے بھی انقلاب آفرین اقدامات اٹھائے گئے ہیں ۔ملک کی تاریخ میں پہلی چھوٹے کاشتکاروں کو 100 ارب روپے کے بلاسود قرضے دےئے جارہے ہیں جبکہ کھادکی قیمتوں میں کمی کر کے کاشتکاروں کو ریلیف فراہم کیاگیا ہے۔ہمارے ان اقدامات سے زرعی شعبہ پر مثبت اثرات پڑے ہیں جس سے زرعی پیداوار میں اضافہ ہوا ہے۔

مزید : لاہور