باپ بچوں کو پستول کا محفوظ استعمال سکھا رہا تھا کہ اچانک۔۔۔وہ تمام لوگ جو گھر پر پستول رکھتےہیں یہ خبر ضرور پڑھیں

باپ بچوں کو پستول کا محفوظ استعمال سکھا رہا تھا کہ اچانک۔۔۔وہ تمام لوگ جو گھر ...
باپ بچوں کو پستول کا محفوظ استعمال سکھا رہا تھا کہ اچانک۔۔۔وہ تمام لوگ جو گھر پر پستول رکھتےہیں یہ خبر ضرور پڑھیں

  



واشنگٹن (نیوز ڈیسک)امریکی ریاست انڈیانا میں ایک باپ نے اپنے بیٹوں کو اسلحے کے خطرات کے متعلق آگاہی دیتے ہوئے اپنی نو سالہ بیٹی کے سر میں گولی مار دی، جس کے نتیجے میں معصوم بچی وہیں تڑپ تڑپ کر موت کے منہ میں چلی گئی۔ جریدے ٹائم کی رپورٹ کے مطابق یہ اندوہناک واقعہ 10 جون کے روز اس وقت پیش آیا جب 33سالہ ایرک ہمل اپنے دو بیٹوں کو اسلحے کے خطرات کے متعلق بتا رہا تھا۔ اسی دوران اس کی کمسن بیٹی اولیویا کمرے میں داخل ہوئی اور اس نے پستول کا رخ اس کی جانب کر کے گھوڑا دبا دیا۔ ایک زوردار دھماکہ ہوا اور ننھی الیویا خون میں لت پت فرش پر گر گئی۔

ایرک کا کہنا ہے کہ وہ سمجھ رہا تھا کہ پستول خالی ہے، تاہم اس کے پاس اس بات کا کوئی جواب نہیں کہ خالی پستول کو بھی بچی کے سر کا نشانہ لے کر چلانے کی ضرورت کیوں پیش آئی۔ وہ کہتا ہے کہ وہ اپنے بیٹوں کو پستول دکھا رہا تھا اور انہیں بتا رہا تھا کہ اس کے ساتھ کبھی نہیں کھیلنا چاہئیے کیونکہ یہ کسی کو ہلاک کرنے کا سبب بن سکتا ہے۔ اس کے بیٹوں کی عمر 9 اور 10سال ہے ۔ بدبخت باپ کے خلاف بچی کے قتل کے الزامات کے تحت قانونی کارروائی کی جارہی ہے، جس کے نتیجے میں اسے 20 سے40 سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس