زرعی ترقی کیلئے ایگریکلچر پالیسی انسٹیٹیوٹ کی تنظیم نو کا فیصلہ

زرعی ترقی کیلئے ایگریکلچر پالیسی انسٹیٹیوٹ کی تنظیم نو کا فیصلہ

لاہور(کامرس رپورٹر) وفاقی وزارت غذائی تحفظ و ریسرچ نے ایگریکلچر پالیسی انسٹیٹیوٹ کی تنظیم نو کے لیے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو لیٹر لکھ دیا ہے۔ذرائع کے مطابق وفاقی وزارت غذائی تحفظ و ریسر چ کے ادارے ایگریکلچر پالیسی انسٹیٹیوٹ کی تنظیم نو کے لیے وزارت غذائی تحفظ و ریسرچ کی جانب سے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو لیٹر لکھا گیا ہے۔ وفاقی وزارت غذائی تحفظ و ریسرچ کی جانب سے ایگری کلچر پالیسی انسٹی ٹیوٹ کے دائرہ کا ر میں اضافہ لانے کے لیے اس انسٹی ٹیوٹ کی تنظیم نو کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ایگری کلچر پالیسی انسٹی ٹیوٹ کی تنظیم نو کے تحت وفاقی حکومت کی جانب سے اس ادارے کا نام تبدیل کر کے پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف فوڈ سیکیورٹی پالیسی اینڈ ریسر چ(پی آئی ایف ایس پی آر) رکھنے کی تجویز ہے۔اس وقت ایگری کلچر پالیسی انسٹی ٹیوٹ وفاقی وزارت غذائی تحفظ کے ریسرچ ونگ کے طور پر کام کر رہا ہے اورکپاس، گنا، گندم سمیت دیگر فصلوں کی سپورٹ پرائز کا تعین کر کے حکومت کو ایڈوائز کرتا ہے جس مقصد کے لیے ایگری کلچر پالیسی انسٹی ٹیوٹ کی جانب سے فیلڈ سروے کے ساتھ ساتھ کاشت کاروں اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ سالانہ اجلاس کا انعقاد بھی کیا جاتا ہے تاہم اس وقت ایگری کلچر پالیسی انسٹی ٹیوٹ کو عملے کی قلت کا سامنا ہے اور 105لوگوں کی ضرورت کے مقابلے میں صرف 65افراد اس ادارے میں کام کر رہے ہیں۔ذرائع کے مطابق ایگری کلچر پالیسی انسٹیٹیوٹ نے ادارے کی ری اسٹرکچرنگ کرتے ہوئے پالیسی ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے طور پر زراعت کے سیکٹر میں نئی معلومات کے دریافت اور ادارے کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا ہے جس کے لیے قلیل اور طویل مد تی حکمت عملی تشکیل دی جائے گی۔

مزید : کامرس