سیمنٹ کی مقامی صنعت کی سالانہ شرح نمو 15 فیصد تک بڑھ گئی

سیمنٹ کی مقامی صنعت کی سالانہ شرح نمو 15 فیصد تک بڑھ گئی

لاہور( کامرس رپورٹر )سیمنٹ کی مقامی صنعت کی سالانہ شرح نمو 15 فیصد تک بڑھ چکی ہے اور صنعت کی موجودہ شرح نمو کے برقرار رہنے سے 2020 تک سیمنٹ ساز ادارے اپنی پیداواری استعداد کی80 فیصد کے مساوی پیداوار حاصل کرنا شروع کر دیں گے۔ آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسی ایشن ( اے پی سی ایم ای) کی رپورٹ کے مطابق سیمنٹ کی طلب میں اضافہ کے باعث سیمنٹ تیار کرنے والے مقامی اداروں نے اپنی پیداواری صلاحیتوں میں اضافہ کی حکمت عملی پر تیزی سے عملدرآمد شروع کردیا ہے ۔رپورٹ کے مطابق سال 2017 کے اختتام پر لکی سیمنٹ اس حوالے سے مارکیٹ لیڈر کے طورپر سامنے آیا اور کمپنی نے کراچی میں واقع اپنے پلانٹ کی پیداواری صلاحیت میں 1.3ملین ٹن کا اضافہ کیا جبکہ اٹک سیمنٹ کی طرف سے بلوچستان کے علاقے حب میں واقع سیمنٹ کی پیداواری استعداد میں 1.2 ملین ٹن کا اضافہ کیا گیا۔اسی طرح گزشتہ ماہ کے دوران ڈی جی خان سیمنٹ نے بھی حب میں واقع اپنے پلانٹ کی توسیع سے پیداوار کی صلاحیت کو مجموعی طورپر 2.8 ملین ٹن تک توسیع دی ہے۔رپورٹ کے مطابق رواں ماہ کے آغازپر بیسٹ وے سیمنٹ کی جانب سے بھی کہا گیا ہے کہ دیوان سیمنٹ کی خریداری اور پیداوار میں اضافہ کے منصوبہ کے تکمیل سے کمپنی کی پیداواری صلاحیت 1.8 ملین ٹن تک پہنچ چکی ہے۔ سیمنٹ کی مقامی صنعت کے فروغ سے نہ صرف روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے بلکہ برآمدات کے فروغ سے قیمتی زرمبادلہ کے حصول سمیت قومی معیشت پر بھی خوش گوار اثرات مرتب ہوں گے۔

مزید : کامرس