شیر دھاڑے گا نہ بلا چلے گا ،تیز سب کو زخمی کردے گا ، عاطف رفیق

شیر دھاڑے گا نہ بلا چلے گا ،تیز سب کو زخمی کردے گا ، عاطف رفیق

لاہور(شہزاد ملک ،تصاویر ذیشان منیر) پیپلز پارٹی کے لاہور کے صوبائی حلقہ پی پی 162کے نامزد امیدوار چودھری عاطف رفیق جٹ نے کہا ہے کہ 25جولائی کو جیت شہید بھٹو اور بے نظیر شہید کی ہو گی اس دن نہ تو شیر دھاڑ سکے گا ور نہ ہی بلے کی باری آئے گی تیر سب کو زخمی کرکے رکھ دے گا ۔روز نامہ پاکستان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ یہ حلقہ پہلے بھی پیپلز پارٹی کا تھا اور اب بھی ہم اس حلقہ کو واپس پیپلز پارٹی کا گڑھ بنائیں گے میر ے والد کینٹ میں پیپلز پارٹی کی پہچان کے نام سے جانے جاتے ہیں اب میری بھی یہی کوشش ہے کہ والد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے پارٹی کو یہاں سے کامیاب کرواؤں ۔انہوں نے کہا کہ (ن) لیگ اور پی ٹی آئی نے سیاست میں چمک کو متعارف کروایا ہے انہوں نے سیاست کو غریب سے چھین کر امیر کی جھولی میں ڈال دیا ہے بھٹو شہید نے ایک مزدور اور ریڑھ بان کو اسمبلی جانے کا موقع دیا لیکن انہوں نے پیسے کے بغیر سیاست کرنامشکل کردیا ہے ان کی وجہ سے آج عوام تو بدحال ہو چکے ہیں لیکن یہ دونوں جماعتیں خوشحال ہو رہی ہیں ۔ پیپلز پارٹی کے امیدوار چودھری عاطف رفیق جٹ کا کہنا تھا کہ الیکشن مہم کے دوران حلقے میں واقع کوڑے پنڈ اور اس کے اطراف کی جٹ برادری نے مکمل طور پر حمایت کا اعلان کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ الیکشن میں پارٹی کے ووٹوں کے ساتھ ساتھ برادری کے ووٹوں کی بھی بڑی اہمیت ہے میں ایک جٹ ہوں اور مجھے اپنی برادری کی مکمل حمایت اور سپورٹ حاصل ہے جو میرے لئے نہائت خوشی کی بات ہے میری برادری کے ووٹ میرے لئے ایک قیمتی اثاثہ ہیں میں یقین دلاتا ہوں کہ اپنے حلقہ کے گاؤں کو ایک بہترین اور ماڈل گاؤں بنا دوں گا۔انہوں نے کہا کہ دو نہیں ایک نیا پاکستان کا نعرہ لگانے والے عمران خان نے ملک میں لوٹوں کی ایک تاریخ ساز فیکٹری قائم کر لی ہے اور اس نے اپنے حقیقی کارکنوں کو ٹکٹیں نہ دیکر حقیقت میں اپنے ’’نام نہاد نئے پاکستان‘‘ کو عملی شکل دینے کی کوشش کی ہے عوام الیکشن میں اس بات کا خیال رکھیں کہ مفاد پرستوں سے نیا پاکستان نہیں بنے گا البتہ قائد کا پاکستان ضرور عمران نے خراب کرنے کی کوشش کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے سیاست کو آلودہ کرنے کی کوشش کی ہے وہ نیا پاکستان پرانے مستریوں سے بنانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے تبدیلی کا نعرہ لگایا تھا بہتر تھا کہ وہ نئے مستری میدان میں اتارتے اور عملی طور پر ثابت کرتے کہ اس طرح کا ہوگا ان کا نیا پاکستان وہ جن لوگوں کے خلاف دھرنا دیتے رہے آج انہی لوگوں کو انہوں نے ٹکٹیں بھی دید ی ہیں۔

عاطف رفیق

مزید : میٹروپولیٹن 1