ن لیگ نے جاوید حسنین شاہ کو این اے 92 کا ٹکٹ جاری کر دیا

ن لیگ نے جاوید حسنین شاہ کو این اے 92 کا ٹکٹ جاری کر دیا

ساہی وال /سرگودھا(رانا محمداسلم ،نمائند ہ خصوصی) ساہی وال /سرگودھا سے مختلف سیاسی پارٹیوں نے اپنے امیدوار میدان میں اتاردیئے ، امیدواروں کو نشانات بھی الاٹ کر دئے گئے۔ این اے 92 جو کہ دو تحصیلوں پی پی 80 اور پی پی 81 شاہ پور اور ساہی وال پر مشتمل ہے جنرل الیکشن 2018 میں یہاں سے مختلف سیاسی پارٹیوں نے اپنے اپنے امیدوار میدان میں اتارے ہیں مسلم لیگ ن نے یہاں سے دو بار ضمنی الیکشن میں جیتنے والے امیدوار سردار شفقت حیات خان کو ایگنور کرکے سابق ایم این اے سید جاوید حسنین شاہ کو این اے 92 کا ٹکٹ جاری کر دیا ہے جبکہ پی پی 80 سے سابق ممبر ضلع کونسل کے چےئرمین سردار اختر خان بلوچ کے بیٹے بیرسٹر تیمور خان بلوچ کو ٹکٹ جاری کر دیا ۔ تحریک انصاف کی طرف سے پہلے سابق ڈی جی ایف آئی اے میاں ظفر احمد قریشی کا اعلان کرکے پھر ان سے ٹکٹ واپس لے کر پیر آٖف سیال شریف کے بھتیجے صاحبزادہ نعیم الدین سیالوی کو ٹکٹ جاری کر دیا اور پی پی 80 سے سابق تحصیل ناظم سردار غلام علی اصغر خان لاہڑی کو جاری کرد یا پاکستان پیپلز پارٹی نے این اے 92 سے رانا جمشید جھمٹ اور پی پی 80 سے تیمور امیر خان کو ٹکٹ جاری کیا اسی طرح تحریک لبیک کی طرف سے این اے 92 سے صاحبزادہ اظہر عباس سیالوی اور پی پی 80 سے زین عباس بلوچ کو ٹکٹ جاری کئے گئے آزاد امیدواروں میں نور حیات کلیار جوکہ پی ٹی آئی کا ٹکٹ نہ ملنے پر آزاد امیدوار کے طور پر پی پی 80 سے الیکشن لڑیں گے جبکہ ن لیگ کا ٹکٹ نہ ملنے پر سردار شفقت بلوچ بھی میدان میں اتریں ہیں اسی طرح میاں ظفر احمد قریشی جن کو ٹکٹ جاری کرکے واپس لے لیا گیا وہ بھی آزاد الیکشن لڑیں گے ۔نشان الاٹ ہونے کے بعد تمام امیدوار وں نے اپنی الیکشن مہم تیز کر دی ہے اور اپنے اپنے علاقوں کے علاوہ مختلف مقامات پر ووٹرز کے دروازے کھٹکھٹا رہے ہیں کہیں سے ہاں اور کہیں سے نہ کی آوازیں بھی گونج رہی ہیں موجودہ صورت حال میں اور عوامی رائے کے مطابق اس حلقہ میں پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن جوڑ بنے گا کیونکہ یہ حلقہ مسلم لیگ ن کا گڑھ رہاہے اور پچھلے دونوں عام انتخابات میں مسلم لیگ ن ہی کے امیدوار جیتے تاہم اس بار یہاں سے مسلم لیگ ن اور پاکستان تحریک انصاف کے درمیان مقابلہ ہوگا جبکہ آزاد امیدوار میاں ظفر احمد قریشی بھی اس مقابلے کی دوڑ میں ہیں کیونکہ میاں ظفر احمد قریشی کے بھائی میاں مظہر احمد قریشی بھی اس حلقہ سے ایم این اے رہ چکے ہیں اسی طرح پی پی 80 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار سردار تیمور خان اور پی ٹی آئی کے غلام علی اصغر خان لاہڑی اور پی ٹی آئی کا ٹکٹ نہ ملنے والے امیدوار میاں نور حیات کلیار ۔ تحریک لبیک کے زین عباس بلوچ کے درمیان کانٹے دار مقابلہ ہو گا۔ دریں اثنا امیدواروں کو نشانات الاٹ کر دئے گئے حلقہ این اے 92 مسلم لیگ ن کے امیدوار سید جاوید حسنین شاہ شیر پی ٹی آئی کے صاحبزادہ نعیم الدین سیالوی بلا ،پیپلز پارٹی رانا جمشید جھمٹ تیر، ظفر احمد قریشی گھڑا ، احمد مہدی شاہ گن ،عنصر بلوچ بالٹی، صاحبزادہ اظہر عباس سیالوی کرین ، جبکہ پی پی 80 میں مسلم لیگ ن کے تیمور علی خان کو شیر ،غلام علی اصغر خان لاہڑی بلا، تیمور امیر خان تیر ، زین عباس بلوچ کرین ، نور حیات کلیار سیب کے نشان الاٹ کر دئے گئے ہیں جبکہ امیدوار ایم پی اے رانا محمد اکرم نے اپنی درخواست واپس لے لی ۔

ٹکٹ جاری

مزید : علاقائی