رضاعلی گیلانی کا پی پی 184،185سے آزاد الیکشن لڑنے کا فیصلہ

رضاعلی گیلانی کا پی پی 184،185سے آزاد الیکشن لڑنے کا فیصلہ

اوکاڑہ،دیپال پور،حجرہ شاہ مقیم (بیورورپورٹ، تحصیل رپورٹر،نمائندگان ،نامہ نگار) ضلع اوکاڑہ کی سیاست میں ڈرامائی تبدیلی، رضاعلی گیلانی پی پی 184،185سے آزاد حیثیت سے الیکشن لڑیں گے،پی پی184 سے رضاعلی گیلانی نے ن لیگ کی ٹکٹ پر الیکشن لڑنے سے انکار کر دیا،آز اد امیدواران حجرہ شاہ مقیم سیدرضا علی گیلانی اور میاں منظور احمد خاں وٹو کا اتحاد بھی ختم۔ این اے143اور این اے144میں ڈرامائی سیاسی صورت حال پی پی184مسلم لیگ(ن) کے اُمیدوار رضاعلی گیلانی نے مسلم لیگ(ن) کی ٹکٹ واپس کر کے آزاد حیثیت سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کرلیاباوثوق ذرائع کے مطابق سابق صوبائی وزیر ہائیر ایجوکیشن رضاعلی گیلانی نے این اے 143میں تحریک انصاف کے اُمیدوار گلزار سبطین کے ساتھ آزاد حیثیت سے پی پی 184سے الیکشن میں حصہ لینے کا فیصلہ کرلیا ہے جب کہ دوسری طرف حلقہ این اے144میں مسلم لیگ(ن)کے اُمیدوار قومی اسمبلی راؤ محمد اجمل خاں نے آزاد حیثیت سے الیکشن میں حصہ لینے والی سیدہ جگنو محسن جوکہ پی پی184سے الیکشن لڑرہی ہیں سیدہ جگنو محسن حلقہ میں خاصی شہرت کی حامل ہیں سے اتحاد کر لیاہے، ریٹرنگ آفیسرکی طرف سے رضا علی گیلانی کو پی پی184سے انتخابی نشان سکوٹر الاٹ ہو ا جبکہ سیدہ جگنو محسن کو انتخابی نشان مٹکا الاٹ ہواہے، رضاعلی گیلانی تحریک انصاف کے قومی اسمبلی کے اُمیدوار سید گلزار سبطین کے ساتھ اتحادی ہیں،جبکہ سید ہ جگنو محسن مسلم لیگ(ن) کے راؤ محمد اجمل کے ساتھ اتحادی ہے، یوں ملک کی بڑی سیاسی جماعتوں کے اُمیدواروں کاآزاد حیثیت سے انتخابات میں حصہ لینے والے اُمیدواروں سے اتحاد دلچسپ صورتحال اختیار کر گیاہے۔دریں اثنا دیپال پور کی سیاست میں ڈرامائی تبدیلی آ گئی ،(ن) لیگی امیدوار قومی اسمبلی راؤ محمد اجمل خاں نے حلقہ پی پی 184سے رضا علی گیلانی کے مد مقابل مضبوط آزاد امیدوار سیدہ جگنو محسن کرمانی سے انتخابی اتحاد کر لیا ،امیدواروں کو انتخابی نشان بھی الاٹ کر دیئے گئے ۔ این اے 143میں (ن) لیگ کو اس وقت بڑا سیاسی جھٹکا لگا جب (ن) لیگ کے ٹکٹ ہولڈر سابق صوبائی وزیر ہائیر ایجوکیشن پنجاب سید رضا علی گیلانی نے اپنے آبائی حلقہ پی پی 184کیلئے (ن) لیگ کی جانب سے انہیں دیا گیا ٹکٹ پارٹی قیادت کو واپس کر دیا اور خود آزاد امیدوار کی حیثیت سے پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار قومی اسمبلی سید گلزار سبطین شاہ نقوی کی مکمل حمائیت کا اعلان کر دیا ،ذرائع کے مطابق رضا علی گیلانی این اے 143میں راؤ محمد اجمل خاں کو (ن) لیگ کی ٹکٹ دیئے جانے کے سخت مخالف تھے دوسری جانب لیگی امیدوار قومی اسمبلی راؤ محمد اجمل خاں نے رضا علی گیلانی کے مد مقابل مضبوط آزاد امیدوار سیدہ جگنو محسن کرمانی کے ساتھ مل کر اپنا سیاسی انتخابی اتحاد بنا لیا ہے ۔حلقہ پی پی 184میں اب مسلم لیگ(ن ) کے کارکنان پولنگ کے دن شیر کے نشان کی بجائے جگنو محسن کرمانی کو جاری کیئے گئے انتخابی نشان "مٹکا"پر مہر لگائیں گے جبکہ دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے کارکنان اس حلقہ میں بلے کے نشان کی بجائے سید رضا علی گیلانی کو الاٹ کیے گئے انتخابی نشا ن "سکوٹر"پر مہر ثبت کریں گے قومی اسمبلی کے اس حلقہ میں سیاسی جوڑ توڑ کا عمل جاری ہے ،پاکستان مسلم لیگ (ن) کے امیدوار قومی اسمبلی راؤ محمد اجمل خاں پی پی 184میں سیدہ جگنو محسن اور پی پی 187سے لیگی امیدوار ملک علی عباس کے ہمراہ الیکشن لڑ رہے ہیں جبکہ دوسری جانب تحریک انصاف کی جانب سے قومی اسمبلی کے امیدوار سید گلزار سبطین شاہ نقوی پی پی 184سے سید رضا علی گیلانی اور پی پی 187سے چوہدری طارق ارشاد خاں کے ہمراہ اپنی سیاسی کمپیئن چلا رہے ہیں قومی اسمبلی کے دونوں امیدواروں کانٹے دار مقابلے کی توقع کی جا رہی ہے ۔ علاوہ ازیںآز اد امیدواران حجرہ شاہ مقیم سیدرضا علی گیلانی اور میاں منظور احمد خاں وٹو کا اتحاد ختم ، میاں منظور وٹو کی بیٹی روبینہ شاہین وٹو PP185میں سید رضا علی گیلانی کے مقابلے میں پی ٹی آ ئی کے ٹکٹ سے الیکشن میں حصہ لیں گی۔ شاہ مقیم گروپ اور تعمیر وطن گروپ کی قیادت میں گزشتہ دنوں آ پس میں ایک مشروط اتحاد کیا گیا تھا جس بنا پر دونوں سیاسی گروپ الیکشن میں ایک دوسرے کو سپورٹ کریں گے شرائط میں یہ طے پایا تھا کہ این اے 143سے میاں منظور احمد خاں وٹو دستبردار ہوں گے جبکہ این اے 144سے سید رضا علی گیلانی میاں منظور احمد خاں وٹو کے مقابلے میں دستبردار ہوں گے پی پی 185اور 184میں سید رضا علی گیلانی کے مقابلے میں تعمیر وطن گروپ کوئی امیدوار کھڑا نہیں کر ے گا اور دونوں حلقوں میں دونوں سیاسی گروپ ایک دوسرے کو سپورٹ کریں گے جبکہ گزشتہ روز پی پی 185میں روبینہ شاہین وٹو کو پی ٹی آ ئی کا ٹکٹ مل جا نے پر انہوں نے 185میں الیکشن لڑنے کا اعلان کر دیا اور سید رضا علی گیلانی کے حق میں دستبردار ہو نے سے انکار کر دیا جس بنا پر دونوں سیاسی گروپ کا اتحاد ختم ہو گیا پی پی 185سے پی ٹی آ ئی کے پلیٹ فارم سے روبینہ شاہین وٹو سید رضا علی گیلانی کے مقابلہ میں الیکشن میں حصہ لیں گی جبکہ پی پی184 میں سید رضا علی گیلانی کے مقابلہ میں سیدہ جگنو محسن الیکشن میں حصہ لیں گے این اے 143میں راؤ محمدا جمل خاں ن لیگ سے اور پی پی 184سے سیدہ جگنو محسن مل کر الیکشن لڑیں گی اور ایک دوسرے کو سپورٹ کریں گے جبکہ رضا علی گیلانی آ زاد امیدوار پی ٹی آ ئی کے این اے 143کے امیدوار گلزار سبطین شاہ سے مل کر الیکشن میں حصہ لیں گے اس طرح بلا اور سکوٹر بمقابلہ شیر اور مٹکا ہو گا۔

آزاد الیکشن

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...