پنجاب میں دفعہ144نافذ، امیدواروں کی حتمی فہرستیں آویزاں فوج کی نگرانی میں بیلٹ پیپرز کی چھپائی شروع

پنجاب میں دفعہ144نافذ، امیدواروں کی حتمی فہرستیں آویزاں فوج کی نگرانی میں ...

 اسلام آباد( سٹاف رپورٹر )ملک بھر میں عام انتخابات کیلئے امیدواروں کی حتمی فہرستیں ہفتہ کو ریٹرننگ افسران (آر اوز)اور ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران (ڈی آر اوز)کے دفاتر میں آویزاں کرنے کے بعد امیدواروں کو انتخابی نشان الاٹ کر دئیے گئے۔امیدواروں کی حتمی فہرستیں جاری ہونے کے بعد فوج کی نگرانی میں بیلٹ پیپرز کی چھپائی کا عمل شروع ہوگا۔الیکشن کمیشن شیڈول کے مطابق حتمی فہرستیں لگنے اور انتخابی نشانات جاری ہونے کے بعد امیدوار 23جولائی تک انتخابی مہم چلا سکیں گے اور انہیں 23اور 24ٍجولائی کی درمیانی شب (رات 12بجے)ہر صورت انتخابی مہم ختم کرنا ہوگی جبکہ 25جولائی کو عام انتخابات کیلئے ملک بھر میں صبح 8 بجے سے شام 6 بجے تک پولنگ ہوگی ۔ اسلام آباد سے عام انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کی فہرستیں آویزاں کردی گئیں۔وفاقی دارالحکومت میں قومی اسمبلی کے 3 حلقوں پر 76 امیدوار میدان میں ہوں گے جبکہ این اے 53 سے سب سے زیادہ 36 امیدوار آمنے سامنے ہوں گے اور اسی حلقے میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان مدمقابل ہوں گے۔وفاقی دارالحکومت کے حلقہ این اے 54 سے 28 امیدوار میدان میں ہونگے جہاں اسد عمر کا مقابلہ (ن) لیگ کے انجم عقیل سے ہوگا جبکہ پیپلز پارٹی کے عمران اشرف اسی حلقے سے میدان میں ہوں گے۔این اے 54 سے مسلم لیگ (ن) کے ناراض رہنما عبدالحفیظ ٹیپو بطور آزاد امیدار انتخاب میں حصہ لے رہے ہیں۔اسلام آباد سے مسلم لیگ (ن) کے طارق فضل چوہدری، پیپلزپارٹی کے افضل کھوکھر اور تحریک انصاف کے خرم نواز بھی آمنے سامنے ہوں گے۔اس کے علاوہ حلقہ این اے 52 میں سب سے کم امیدوار سامنے آئے ہیں جہاں 12 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوگا۔

حتمی فہرستیں

راولپنڈی(جنرل رپورٹر)انتخابات 2018 کے لیے قومی اور صوبائی اسمبلی کے مختلف حلقوں سے الیکشن لڑنے والے سابق وفاقی وزیر داخلہ اور مسلم لیگ (ن) کے ناراض رہنما چوہدری نثار علی خان سمیت راجن پور سے تعلق رکھنے والے دیگر منحرف رہنما کو ’جیپ‘ کا نشان الاٹ کردیا گیا۔پنجاب اسمبلی کے حلقہ پی پی 12 کیلئے چوہدری نثار کو ’جیپ‘ کا نشان ریٹرنگ آفیسر نجیب اللہ نے الاٹ کیا ٗاس کے علاوہ انہیں صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 10 سے بھی الیکشن لڑنے کیلئے ’جیپ‘ کا انتخابی نشان الاٹ کیا گیا۔ادھر قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 59 کیلئے بھی چوہدری نثار کو جیپ کا نشان الاٹ کیا گیا، ریٹرنگ آفیسر شبریز اختر راجہ نے انہیں مذکورہ نشان الاٹ کیا، اس کے علاوہ قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 63 سے بھی سابق وزیر داخلہ کو ’جیپ‘ کا انتخابی نشان الاٹ کر دیا گیا۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ ’جیپ‘ کے نشان کیلئے سابق وزیر داخلہ چودھری نثار نے اپنے وکیل کے ذریعے درخواست دی تھی۔مظفرگڑھ میں مسلم لیگ (ن) کے این اے 181 سے امیدوار ملک سلطان محمود ہنجرا نے پارٹی ٹکٹ ملنے کے باوجود آزاد امیدوار کی حیثیت سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا اور ریٹرننگ آفیسر کوانتخابی نشان ’جیپ‘ الاٹ کرنے کی درخواست دی۔ راجن پور سے تعلق رکھنے والے مسلم لیگ (ن) کے 4 رہنماؤں نے پارٹی ٹکٹ واپس کرکے آزاد حیثیت میں الیکشن لڑنے کا اعلان کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سے ’جیپ‘ کا انتخابی نشان الاٹ کرنے کی درخواست بھی کی جسے منظور کرلیا گیا۔راجن پور سے مسلم لیگ (ن) کے ٹکٹ واپس کرنے والے رہنماؤں میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 193 اور پنجاب اسمبلی کے حلقہ پی پی 293 سے اْمیدوار سابق ڈپٹی سپیکر پنجاب اسمبلی شیر علی گورچانی اور ان کے والد پرویز گورچانی شامل ہیں، جو صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 294 سے اْمیدوار ہیں۔

جیپ/ نشان

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر انتخابات میں امن وامان کی صورتحال کو درپیش خدشات کے پیش نظر اور امن عامہ کو یقینی بنانے کیلئے صوبہ بھر میں دفعہ 144نافذ کر دی گئی ۔ جس کے تحت ہر قسم کے بشمول لائسنس یافتہ اسلحہ لے کر چلنے اور اس کی نمائش ، فائرنگ، الیکشن کمیشن کے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی کسی بھی شق کی خلاف ورزی ، دیہی علاقے کے پولنگ سٹیشن کے 400میٹر دائرہ کے اندر، گنجان آباد شہری علاقے کے پولنگ سٹیشن کے 100میٹر اندر پانچ افراد سے زیادہ لوگوں کے اکٹھے ہونے (علاوہ ازاں ووٹر لائن)،آتش بازی کرنے ،پولنگ سٹیشن اور عوامی اجتماعات میں فائر کریکر، پٹاخے چلانے،وال چاکنگ کرنے سپیکر کے غلط استعمال اور نفرت پر مبنی اشتعال انگیزتقاریر کرنے ،ریلیاں نکالنے،اجتماعات کرنے اور الیکشن آفس کے باہر جیت کا جشن منانے پر پابندی عائد کر دی گئی۔اس سلسلہ میں تمام بلدیاتی افسران کو بھی ہدایت کی گئی ہے کہ وہ بھی مقامی انتظامیہ کے ساتھ مل کر ان ہدایات پر عمل در آمد کو یقینی بنائیں۔دوسری جانب محکمہ بلدیات نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ضابطہ اخلاق پر عمل در آمد کرتے ہوئے تمام بلدیاتی افسران و اہلکاران کی مانیٹرنگ کا سختی سے فیصلہ کیا ہے تاکہ کسی بھی سیاسی شخصیت بارے پسند یا نا پسند، خیالات اور ترجمانی نہ ہو سکے۔ اس سلسلہ میں اگر کسی بھی جگہ سے شکایت مو صول ہوئی توسخت ایکشن لینے کی ہدایت کر دی گئی ۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...