پارٹی چھوڑی نہ سیاست سے کنارہ کشی اختیار کی،پرویز مشرف

پارٹی چھوڑی نہ سیاست سے کنارہ کشی اختیار کی،پرویز مشرف

اسلام آباد/دبئی(این این آئی)سابق صدر مملکت اور آل پاکستان مسلم لیگ کے سرپرست اعلیٰ پرویز مشرف نے کہا ہے کہ پارٹی چھوڑی نہ سیاست سے کنارہ کشی اختیار کی ، 2013میں الیکشن سے روک کر سیاسی انتقام لیا گیا جبکہ 2018کے انتخابات میں بھی سیاسی الزامات لگا کر روکا گیا۔ عوام کی خوشحالی اورچترال کی تعمیر و ترقی کیلئے بیشتر منصوبے شروع کیے جس کے بدلے لوگوں کا پیار ملا۔آج چترال والوں کو کچھ دینے کی بجائے ان سے کچھ مانگ رہا ہوں۔ چترال کی عوام الیکشن 2018 میں میرے امیدواروں ڈاکٹر محمد امجد اور سہراب خان کو کامیاب بنائیں۔انہیں ووٹ دیں گے تو میں سمجھوں گا مجھے ووٹ ملا۔میں آل پاکستان مسلم لیگ اورڈاکٹر محمد امجد کے ساتھ ہوں اور انہی کے ساتھ رہوں گا۔ڈاکٹر امجد کو کئی سالوں سے جانتا ہوں، یقین دلاتا ہوں کہ یہ دیگر امیدواروں کی نسبت آپ کی کہیں زیادہ بہترطور پر خدمت کریں گے۔میں خود ان کی سرپرستی اور راہنمائی کروں گا۔ چترال کے عوام کے نام ویڈیو پیغام میں انہوں نے کہا کہ میں نے چترال میں نہریں بنوائیں، بجلی کے منصوبے شروع کیے اور لواری ٹنل بنا کر پچاس سالہ مطالبہ پورا کیایہی وجہ ہے کہ چترال کے عوام آج بھی مجھ سے خصوصی لگا? رکھتے ہیں جس پر مجھے فخر ہے۔ اب بھی میں نے اپنے کاغذات نامزدگی چترال ہی کے لئے جمع کروائے مگرایک مرتبہ پھرسیاسی الزامات لگا کرمجھے الیکشن میں حصہ لینے سے روک دیا گیاجس کی وجوہات بعد میں بتاؤں گا۔ آج بھی اے پی ایم ایل کے ساتھ ہوں سیاسی میدان کسی کیلئے کھلا چھوڑوں گا نہ سیاست ترک کروں گا۔ وطن واپسی سے روکنے کی وجوہات جلد قوم کو بتا?ں گا۔اے پی ایم ایل نے قومی اسمبلی کے ساٹھ سے زائد امیدواران کو ٹکٹ جاری کئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ وہ ضرور پاکستان آئیں گے اور ایک مرتبہ پھر عوام کے ساتھ ہوں گے۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...