حکومت میں آکر بیروزگاری کے خاتمہ کیلئے ہر حد تک جائیں گے :حیدر ہوتی

حکومت میں آکر بیروزگاری کے خاتمہ کیلئے ہر حد تک جائیں گے :حیدر ہوتی

شہرہ ( بیورورپورٹ)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ صوبہ معاشی طور پر دیوالیہ ہو چکا ہے اور آج اخبارات میں شائع ہونے والی خبروں سے یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں کیلئے خزانے میں رقم موجود نہیں ہے ،اے این پی طویل عرصہ سے عوام کے علم میں یہ بات لاتی رہی ہے کہ صوبائی حکومت نے خزانہ لوٹ لیا ہے اور سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن کیلئے پیسہ نہیں ہے، کپتان کی پریشانی کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے پی ٹی آئی کے نظریاتی کارکنوں کو نظر انداز کر کے لوٹوں کو ٹکٹ جاری کئے ، فرد واحد کیلئے نہیں بلکہ قوم کی بقاء کیلئے اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کرنے کی ضرورت ہے ، حکومت میں آ کر مرکز کے پاس رہ جانے والے صوبے کے حقوق حاصل کریں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے سی کالونی نوشہرہ این اے 25میں انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،، اے این پی کے امیدوار اور ضلعی صدر ملک جمعہ خان نے بھی اس موققع پر خطاب کیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ سابق حکومت کی غیر ذمہ دارانہ اور غیر سنجیدہ پالیسیوں کی وجہ سے صوبہ مالی بحران کا شکار ہوا ، انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعلیٰ نے صوبے کے ساتھ ساتھ اپنے ہی حلقہ کے عوام کی تذلیل کی اور انہیں ان کے جائز حقوق سے محروم رکھا ، انہوں نے کہا کہ پنجاب میں بجلی کے منصوبے اور اورنج ٹرین جیسے منصوبے بن رہے ہیں ،سندھ میں تھرکول اور بلوچستان میں گوادر مکمل ہو رہا ہے جبکہ ہمارے صوبے میں سابق حکومت نے پشاور کو کھنڈرات میں تبدیل کر دیا ،ہر جانب تباہی کے آثارہیں ،انہوں نے کہا کہ اے این پی حکومت میں آ کر عوام کی محرومیوں کا ازالہ کرے گی ، ہر ضلع میں ایک یونیورسٹی اور ہر حلقہ میں ایک کالج کے وعدے کو عملی جامہ پہنائے گی ، مرکزی سے اپنے حقوق حاصل کریں گے اور ترقی کے نئے دور کا آغاز کریں گے، انہوں نے کہا کہ سابق صوبائی حکومت نے بے روزگاری کے خاتمے کیلئے گدھوں کی تجارت شروع کیاور نوجوانوں کو چوہے مار مہم پر لگا دیا گیا ، انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ حکومت کی غیر سنجیدگی کی وجہ سے بے روزگاری اور مہنگائی میں اضافہ ہوا ، انہوں نے کہا کہ اے این پی کامیابی کے بعد بے روزگاری کے خاتمے پر توجہ دے گی اور نوجوانوں کو 10لاکھ تک بلاسود قرضے فراہم کرے گی تاکہ وہ اپنے لئے روزگار کے مواقع پیدا کر سکیں، بی آر ٹی اپنے ذاتی مقاصد کیلئے شروع کی گئی اور مفادات حاصل کر کے اسے ادھورا چھوڑ دیا گیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ اے این پی حکومت میں آ کر بی آر ٹی مکمل کرے گی ،انہوں نے یاد دلایا کہ اے این پی نے اپنے دور حکومت میں حیات آباد سے چارسدہ روڈ تک رنگ روڈ کی بحالی کا کام کیا اور اب دوبارہ چمکنی تا چارسدہ روڈ اور سدرن بائی پاس کی تعمیر یقینی بنائیں گے تاکہ ارد گرد کے علاقوں کو لنک کیا جا سکے ، انہوں نے پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں پر زور دیا کہ الیکشن کی بھرپور تیاریاں جاری رکھیں اور عوام اپنے حقوق کے تحفظ اور اپنی آئندہ نسلوں کی بقا کیلئے اے این پی کو کامیاب کریں۔

مردان( بیورورپورٹ) اے این پی کے صوبائی صدر اور سابق وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی نے عبدالولی خان یونیورسٹی سے مستقل ملازمین کو برطرف کرنے کے فیصلے پر شدید غم وغصے کا اظہا رکرتے ہوئے کہاہے کہ اقتدار میں آتے ہی تمام نکالے گئے ملازمین کو بحال کیاجائے گا جبکہ غریب ملازمین کے خلاف کاروائی کرنے والوں سے حساب کتاب لیاجائے گا وہ گلی باغ ہوتی ،منگا الگ الگ انتخابی جلسوں سے خطاب اور برطرف کئے جانے والے یونیورسٹی ملازمین کے وفد سے گفتگو کررہے تھے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ جامعہ عبدالولی خان انتظامیہ نے ہزاروں خاندانوں کا معاشی قتل عام کیا اوران کایہ اقدام ناقابل معافی ہے انہوں نے کہاکہ اے این پی لوگوں کو روزگار دینے کی پالیسی پر گامزن ہے غریب لوگوں کے منہ سے نوالہ چھینے والے کسی رورعایت کے حق دار نہیں انہوں نے کہاکہ سابقہ حکومت نے نوجوانوں سے روزگار کے جھوٹے دعوے کئے اورجب ان سے کچھ نہ بنا تو’’ چوہے مار ‘‘ فیکٹریاں کھول کر پختون نوجوانوں کی تضحیک کی گئی انہوں نے سابقہ حکومت کے چہیتوں کے اقدام کے پیچھے پختون دشمنی کے سوا کچھ نہیں برطرف ملازمین 25جولائی تک صبر کریں صوبے کا اختیار ملتے ہی پہلا اقدام کے طورپر ان کے بحالی کے احکامات جاری کئے جائیں گے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ صوبے کے چیف ایگزیکٹو نے پانچ سال تک دھرنوں کی سیاست کی اور عوامی مسائل کو پس پشت ڈالے رکھا جس کا خمیازہ غریب عوام کو بھگتنا پڑا ، انہوں نے کہا کہ پنجاب میں سی پیک ،سندھ میں تھرکول اور بلوچستان میں گوادر جیسے منصوبے شروع کئے گئے جبکہ یہاں صوبائی حکومت گدھوں کی تجارت میں لگ گئی انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ حکومت کی غیر سنجیدگی کی وجہ سے بے روزگاری اور مہنگائی میں اضافہ ہوا ، انہوں نے کہا کہ اے این پی کامیابی کے بعد بے روزگاری کے خاتمے پر توجہ دے گی اور نوجوانوں کو 10لاکھ تک بلاسود قرضے فراہم کرے گی تاکہ وہ اپنے لئے روزگار کے مواقع پیدا کر سکیں ، انہوں نے پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں پر زور دیا کہ الیکشن کی بھرپور تیاریاں جاری رکھیں اور عوام اپنے حقوق کے تحفظ اور اپنی آئندہ نسلوں کی بقا کیلئے اے این پی کو کامیاب کرئیں، انہوں نے کہا کہ اقتدارمیں آکرنہ صرف خالی خزانہ بھریں گے بلکہ ترقی کا رکا ہوا پہیہ دوبارہ چلائیں گے، بیرونی سرمایہ کاروں کو لاکر کارخانے لگائیں گے اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ پختونوں کو اب مزید نام نہاد تبدیلی کے دعوؤں میں نہیں آنا چاہئے وقت نے سونامی والوں کا مکروہ چہرہ بے نقاب کردیاہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...