فاروق حیدر سنجیدہ آئینی مسائل پر گفتگو سے پرہیز کریں ،مسلم کانفرنسی رہنما

فاروق حیدر سنجیدہ آئینی مسائل پر گفتگو سے پرہیز کریں ،مسلم کانفرنسی رہنما

مظفرآباد(بیورورپورٹ) فاروق حیدر سنجیدہ آئینی مسائل پر گفتگو سے پرہیز کریں ، فاروق حیدر آئینی قانونی معاملات پر رائے زنی سے اجتناب کریں ڈیزل والی سرکار کا آئین سے کیا سروکار ، ان خیالات کا اظہار مسلم کانفرنسی رہنماؤں راجہ ولید عبداللہ ، ملک امتیاز ، نور زمان قریشی ، میر نوید حسین ، چوہدری نور دین ، شفاعت عباسی، خواجہ رفیق ، امجد حسین مغل ، عابدہ کوثر رابعہ نورین ملک ، عالیہ کاظمی نے فاروق حیدر کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا ہیکہ فاروق حیدر جس منصب پر بیٹھے ہیں وہاں بیٹھ کر اڈا ڈھکی کی زبان استعمال کرنے سے آزاد کشمیر سمیت دنیا بھر کی کشمیری عوام کی جگ ہنسائی کا سبب بن رہی ہے صدر جماعت مسلم کانفرنس سردار عتیق احمد خان کے کردار پر تنقید کرنا آسمان کی طرف تھوکنے کے مترادف ہے ، سردار عتیق احمد خان آزاد کشمیر کے ہی نہیں بلکہ بین الاقوامی لیڈر ہیں ،حادثاتی طور لیڈر بننے سے کوئی لیڈر نہیں بنتا ،سردار عتیق احمد مجاہد اول سردار عبدالقیوم خان کے جانشین ہیں سردار عبدالقیوم خان کی تحریک آزادی کشمیرکے لئے خدمات کو دنیا بھر میں سراہا جاتا ہے ، سب سے بڑے کشمیر ی ہونے کے دعوئے دار وں نے ذاتی مفاد کی خاطر ریاستی جماعت کو تقسیم کیا ، راجا فاروق حیدر خان احسان فراموش شخص ہے جس کو مجاہد اول نے پٹرول پمپ سے اٹھا کر سیاست میں لایا آج یہی شخص ان کے اور ریاستی جماعت کے بارے میں برا بھلا کہتا ہے ، اقتدار آنے جانے کی چیز ہے انسان کو اپنے کپڑوں کے اندر ہی رہنا چاہیے ، دوسرے کے گریبان میں جھانکنے سے بہتر ہے کہ پہلے اپنے گریبان میں جھانک کر دیکھے کہ اس میں کیا اچھائی اور برائی ہے ، رہنماؤں کا کہنا تھا کہ ایکٹ 74 اور تیرہویں ترامیم پر بات کرنے والوں کی سوچ ٹائر پنکچر کے ٹیکس تک محدود ہے ، مسلم لیگ ن آزاد کشمیر حکومت نے عوام کو با اختیار بنانے کے ساتھ ساتھ بھاری ٹیکسز اور بھکاری بننے پر مجبور کر دیا ہے ،تیرہویں آئینی ترمیم آزاد حکومت کو مہنگی پڑے گی کشمیر کونسل سے جان چھڑانے کی جلد بازی نے ایف بی آر کا دائرہ کار آزاد کشمیر تک وسیع کر دیا ہے ، فاروق حیدر خان کی آئینی ترمیم سے آزاد کشمیر کے ٹیکس محصولات میں سالانہ 12 ارب روپے کی کمی کا خدشہ بڑھ گیا ہے ، تیرہویں ترمیم سے قبل آزاد کشمیر سے ٹیکس اکھٹا کرنے کی ذمہ داری کشمیر کونسل کی تھی ، کشمیر کونسل کا 80 فیصد حصہ آزاد حکومت کو واپس کرتی تھی ، تیرہویں ترمیم کے بعد آزاد کشمیر سے ٹیکس اکٹھا کرنا ایف بی آر کا سبجیکٹ بن گیا ہے ۔وزیر اعظم آزاد کشمیر کا دعوی ہیکہ آزاد کشمیر مالی طور پر با اختیار ہو گیا ہے کمشنر ان لینڈ ریونیو میرپور کے خط نے آزاد حکومت کے دعوئے کی ساری قلعی کھول دی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ فاروق حیدر معاملات کو سلجھانے کے بجائے الجھا رہے ہیں زبان ہر کوئی استعمال کر سکتا ہے ایک زبان ہی انسان کی وہ چیز ہے جس سے انسان کا کردار نمایا ں ہوتا ہے اگر آئندہ صدر آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس سردار عتیق احمد خان کے خلاف بے ہودہ زبادہ بند نہ کئی تو مقابلہ کرنا مشکل ہی نہیں نہ ممکن ہو جائے گا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر