مسلم لیگ (ن) سندھ کی قیادت نے ٹکٹ کیلئے 30لاکھ روپے کا مطالبہ کیا ، سر فراز جتوئی

مسلم لیگ (ن) سندھ کی قیادت نے ٹکٹ کیلئے 30لاکھ روپے کا مطالبہ کیا ، سر فراز ...
مسلم لیگ (ن) سندھ کی قیادت نے ٹکٹ کیلئے 30لاکھ روپے کا مطالبہ کیا ، سر فراز جتوئی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد ( این این آئی ) مسلم لیگ (ن) سندھ کے سابق صدر بابو سر فراز جتوئی نے پارٹی قیادت پر ٹکٹ کیلئے 30لاکھ روپے کا مطالبہ کرنے کا سنگین الزام لگا دیا۔ بابو سر فراز جتوئی جو مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سینئر نائب صدر بھی رہ چکے ہیں الزام لگایا کہ 30لاکھ روپے کا مطالبہ پارٹی کے سندھ قیادت نے کیا۔

انہوں نے کہا کہ 30لاکھ روپے دینے سے انکار پر مجھے این اے 201لاڑکانہ سے ٹکٹ نہیں دیا گیا اور پارٹی کے لیے میری 30سالہ قربانیوں اور وفاداری کا یہ صلہ دی دیا گیا۔ بابو سر فراز جتوئی نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے پورا دن ٹکٹ کا انتظار کیا اور جب پارٹی کی سندھ قیادت سے رابطہ کیا تو 30لاکھ روپے کا مطالبہ کیا گیا۔

انہوں نے الزام لگایا کہ مسلم لیگ (ن) سندھ کے موجودہ صدر شاہ محمد شاہ نے سندھ میں ٹکٹوں کی منڈی لگائی اور پیسے دینے والوں کو پارٹی ٹکٹ تقسیم کیے۔ انہوں نے کہا کہ احتجاجاً الیکشن سے دستبردار ہوگیا ہوں ، ہفتہ کی شام لاڑکانہ میں پریس کانفرنس کروں گا اور مسلم لیگ (ن) سندھ کا مکروہ چہرہ بے نقاب کروں گا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد