حوثی ملیشیا کے الحدیدہ سے انخلاتک کوئی سیاسی حل قبول نہیں:یمن 

حوثی ملیشیا کے الحدیدہ سے انخلاتک کوئی سیاسی حل قبول نہیں:یمن 
حوثی ملیشیا کے الحدیدہ سے انخلاتک کوئی سیاسی حل قبول نہیں:یمن 

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

دمشق (آن لائن)یمن کی آئینی حکومت نے واضح کیا ہے کہ جب تک حوثی باغی ساحلی شہر الحدیدہ سے نکل نہیں جاتے اس وقت تک فائر بندی کامیاب نہیں ہوسکتی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق یمنی حکومت کی طرف سے جاری ایک بیان میں حوثی ملیشیا پر زور دیا گیا ہے کہ وہ الحدیدہ شہر، اس کی بندرگاہ، الصلیف بندرگاہ اور دیگر تمام مقامات سے غیر مشروط طورپر نکل جائیں تاکہ اقوام متحدہ کی نگرانی میں سیاسی عمل پرکام شروع کیا جا سکے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ جب تک حوثی ملیشیا اپنی ہٹ دھرمی پرقائم ہے اس وقت تک سیاسی بات چیت کی کوئی کوشش بار آور ثابت نہیں ہوسکتی جبکہ ماضی میں بھی حوثیوں نے فائربندی کے کسی بھی معاہدے کی پاسداری نہیں کی۔

یمنی حکومت کا کہنا ہے کہ ملک میں جاری بحران خلیجی ممالک کی طرف سے پیش کردہ فارمولے کی روشنی اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق ہوگا۔ حوثیوں نے یمن میں قیام امن کے لیے اقوام متحدہ کی تمام قراردادوں بالخصوص قرارداد 2216 پر سختی کے ساتھ عمل درآمد کرنا ہوگا۔

مزید : بین الاقوامی