کس طرح کے جسم والی خواتین کو دل کا دورہ پڑنے کا خطرہ دو گنا زیادہ ہوتا ہے؟ سائنسدانوں نے وارننگ دے دی

کس طرح کے جسم والی خواتین کو دل کا دورہ پڑنے کا خطرہ دو گنا زیادہ ہوتا ہے؟ ...
کس طرح کے جسم والی خواتین کو دل کا دورہ پڑنے کا خطرہ دو گنا زیادہ ہوتا ہے؟ سائنسدانوں نے وارننگ دے دی

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) خواتین کی جسمانی ساخت اور اس کے بیماریوں کے ساتھ تعلق پر کی جانے والی ایک تحقیق میں سائنسدانوں نے ایک خاص طرح کی جسمانی ساخت والی خواتین کو وارننگ دے دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق یہ خواتین وہ ہیں جن کا جسم سیب کی شکل کا ہوتا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ جن خواتین کا جسم سیب کی شکل کا ہو انہیں ہارٹ اٹیک آنے کا خطرہ دوگنا زیادہ ہوتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ ایسی خواتین کے پیٹ کے گرد چربی بہت زیادہ جمع ہوتی ہے اور اسی کی وجہ سے ان کی جسمانی ساخت سیب کی طرح بن جاتی ہے۔ یہی چربی ان کو دل کی بیماریاں لاحق ہونے اور ہارٹ اٹیک آنے کا سبب بنتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق نیویارک کے البرٹ آئن سٹائن کالج آف میڈیسن کے سائنسدانوں نے اس تحقیق میں 18سال کے عرصے میں 2ہزار 683خواتین کو زیرنگرانی رکھا۔ اس دوران وہ ان کی جسمانی ساخت اور ان کے مختلف بیماریوں میں مبتلا ہونے کے امکانات کا تجزیہ کرتے رہے۔ نتائج میں سائنسدانوں نے بتایا کہ سیب کے علاوہ بعض خواتین کی جسمانی ساخت ناشپاتی جیسی ہوتی ہیں۔ ایسی خواتین وہ ہوتی ہیں جن کے کولہوں اور ٹانگوں پر چربی زیادہ جمع ہوتی ہے۔ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر شی بین شی کا کہنا تھا کہ ”جب تحقیق میں شامل خواتین جوانی میں تھیں اور ان کی جسمانی ساخت ناشپاتی جیسی تھی ان کو ہارٹ اٹیک آنے کے امکانات 40فیصد کم تھے۔ جوں جوں ان کی عمر بڑھتی گئی اور وہ مائیں بن گئیں ان کے پیٹ پر چربی بڑھنے لگی اور ان کی ساخت سیب کی طرح ہوتی گئی۔ جتنی خواتین کی ساخت تبدیل ہو کر سیب جیسی ہوئی لگ بھگ ان تمام میں ہارٹ اٹیک کا خطرہ باقی کی نسبت 2گنا بڑھ گیا تھا۔ “

مزید : تعلیم و صحت