فنی تعلیمی بورڈ کے مالی سال 2020-21کے بجٹ کی منظوری

فنی تعلیمی بورڈ کے مالی سال 2020-21کے بجٹ کی منظوری

  

لاہور(لیڈی رپورٹر) صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی زیر صدارت پنجاب بورڈ آف ٹیکنیکل ایجوکیشن کا اہم اجلاس منعقد ہوا۔ پنجاب سرمایہ کاری بورڈ کے دفتر میں ہونے والے اجلاس میں فنی تعلیمی بورڈ کے مالی سال 2020-21کے بجٹ کی منظوری دی گئی۔ اجلاس میں بورڈ کے دیگر 13نکاتی ایجنڈے کی بھی منظوری دی گئی۔ بورڈ کے تحت ڈی اے ای، کامرس، میٹرک ٹیک اور میٹرک ووکیشنل 2020 کے امتحانات کے بغیر ترقی پانے والے طلبا کی امتحانی فیس میں 40فی صد کمی کے فیصلے کی توثیق کی گئی۔کورونا وبا کے باعث امتحان کے بغیر اگلی کلاسوں میں ترقی کے لئے فنی تعلیمی بورڈ ایکٹ، آرڈیننس 1962میں ترمیم کی بھی منظوری دے دی گئی۔صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ غربت، بیروزگاری اور معاشی مشکلات پر قابو پانے کیلئے فنی تعلیم کا فروغ وقت کی ضرورت ہے۔وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کی قیادت میں حکومت فنی تعلیم کے فروغ کیلئے انقلابی حکمت عملی پر عمل پیرا ہے۔کورونا وبا کے باعث امتحان کے بغیر اگلی کلاسوں میں ترقی پانے والے طلبا کو فیسوں میں کمی کے فیصلے کا فائدہ ہواہے۔ انہوں نے کہا کہ فنی تعلیمی بورڈ نے مالی سال 2020، 19میں کفایت شعاری پالیسی پر عمل کرتے ہوئے 22کروڑ روپے کی بچت کی ہے۔ فنی تعلیمی بورڈ کامختلف مدت میں 22کروڑ روپے کی بچت کا اقدام خوش آئند ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ بورڈ مالیاتی امور میں محکمہ خزانہ کی گآئیڈ لائن پر مکمل عمل کرے۔کورونا کے پیش نظر امتحانات کے بغیر اگلی کلاسوں میں ترقی کیلئے پروموشن پالیسی کے جائزہ کے لیے ایڈیشنل سیکرٹری اشعر زیدی کی سربراہی میں کمیٹی قائم کر دی گئی۔ صوبائی وزیر میاں اسلم اقبال نے فنی تعلیمی بورڈ کو بورڈ کے زیر اہتمام کھیلوں کی سرگرمیوں کے حوالے سے جامع پلان پیش کرنے کی بھی ہدایت دی۔ اجلاس میں چیئرمین بورڈ محمد ناظر خان نیازی، سیکرٹری بورڈ محمد کیفی اور بورڈ ممبران نے شرکت کی۔

فنی بورڈ

مزید :

صفحہ آخر -