سٹاک ایکسچینج پر حملہ کرنے والوں کو کراچی سے مدد حاصل تھی، غلام نبی میمن

سٹاک ایکسچینج پر حملہ کرنے والوں کو کراچی سے مدد حاصل تھی، غلام نبی میمن

  

کراچی(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن کا کہنا ہے کہ سٹاک ایکسچینج پر حملہ کرنے والوں کو کراچی سے سپورٹ حاصل تھی اور یہ حملہ کسی ایک تنظیم کی جانب سے نہیں کیا گیا۔جیونیوز کے پروگرام ’جیو پاکستان‘ میں گفتگو کرتے ہوئے ایڈیشنل آئی جی غلام نبی میمن نے کہاکہ پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے کی پہلے سے تھریٹ تھی جس کی وجہ سے سیکیورٹی بڑھائی گئی تھی۔انہوں نے کہا کہ حملہ آوروں کو کراچی سے سپورٹ حاصل تھی اور یہ حملہ کسی ایک تنظیم کی جانب سے نہیں کیا گیا۔کراچی پولیس چیف کا کہنا تھا کہ چینی قونصلیٹ اورپی ایس ایکس پر حملیکا ماسٹر مائنڈ ایک ہی لگتا ہے، دونوں حملوں کی کافی چیزیں مماثلت رکھتی ہیں۔ ایڈیشنل آئی جی نے مزید کہا کہ مختلف سلیپر سیل سرگرم دکھائی دے رہے ہیں، حملے کے وقت دہشتگردوں کے ساتھ بیک اپ پر کوئی موجود نہیں تھا جب کہ حملہ آوروں سے ملنے والے اسلحے اور ایمونیشن سے متعلق تحقیقات جاری ہیں۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے کا مقدمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) تھانے میں سرکار کی مدعیت میں درج کرلیا گیا ہے۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے کے مقدمے میں انسداد دہشتگردی، ایکسپلوزو ایکٹ اور قتل سمیت دیگر دفعات شامل کی گئی ہیں۔مقدمہ نامعلوم دہشتگردوں کے خلاف درج کیا گیا جس میں ملزمان سے ملنے والی سب مشین گنز کے نمبرز بھی درج ہیں جب کہ ایف آئی آر میں اسٹاک ایکسچینج سے قبضے لیے گئے دو موبائل فونز کا بھی اندارج کیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق قبضے میں لیے گئے موبائل فونز میں سے ایک موبائل فون اینڈرائڈ جب کہ ایک سادہ موبائل تھا۔

مقدمہ درج

مزید :

صفحہ آخر -