گلبہار دوہرے قتل کے ملزمان کی ضمانت قبل از گرفتاری منسوخ

گلبہار دوہرے قتل کے ملزمان کی ضمانت قبل از گرفتاری منسوخ

  

پشاور(نیوز رپورٹر) ایڈیشنل سیشن جج نے مشہورزمانہ گلبہار دہرے قتل کیس کے ملزمان کی ضمانت قبل ازگرفتاری منسوخ کر دی جس پرانہیں کمرہ عدالت سے گرفتارکرلیاگیا 18مئی 2019کو گلبہار میں سعید پٹواری کی گاڑی پر حملے میں انکے ڈرائیور گوہر علی موقع پر جاں بحق جبکہ سعید پٹواری اورانکے محافظ قیصرخان شدید زخمی ہوگئے تھے جن میں قیصر خان 22روز تک زندگی وموت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد خالق حقیقی سے جاملے دہرے قتل کی لرزہ خیز واردات کے الزام میں گلبہار پولیس نے زاہد علی، ساجد علی، عابد علی، راحت علی،وجاہت علی پسران واجد علی کے خلاف مقدمات درج کیے واردات میں مبینہ طور پرملوث دو ملزمان زاہد علی اور ساجد علی نے کئی ماہ کی روپوشی کے بعد ضمانت قبل ازگرفتاری کرائی تھی جنکی تصدیق کیلئے وہ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج پشاور عظیم خان مشوانی کی عدالت میں پیش ہوئے جسے عدالت نے مسترد کردیا جسکے بعد عدالتی حکم پر پولیس نے ملزمان کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرلیا گرفتاری کے بعد ملزمان کو مقامی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں عدالت نے پولیس کی درخواست پر ملزمان کو پوچھ گچھ کیلئے دورروزہ جسمانی ریمانڈ پر گلبہارپولیس کے حوالے کردیا دہرے قتل کی لرزہ خیز واردات کے دیگر ملزمان عابدعلی، وجاہت علی اور راحت علی تاحال مفرور ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -