کورونا کے دوران ڈاکٹرز کی ہسپتال میں ضرورت ہے ،اسلام آبادہائیکورٹ ڈیوٹی چھوڑ کر عدالت آنے والے ڈاکٹرز پر برہم

کورونا کے دوران ڈاکٹرز کی ہسپتال میں ضرورت ہے ،اسلام آبادہائیکورٹ ڈیوٹی ...
کورونا کے دوران ڈاکٹرز کی ہسپتال میں ضرورت ہے ،اسلام آبادہائیکورٹ ڈیوٹی چھوڑ کر عدالت آنے والے ڈاکٹرز پر برہم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پروموشن کیس میں ہسپتال میں ڈیوٹی چھوڑ کر عدالت آنے والے ڈاکٹرز پر اسلام آبادہائیکورٹ برہم ہو گئی،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ کورونا کے دوران ڈاکٹرز کی ہسپتال میں ضرورت ہے ۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں ڈاکٹرز کی پروموشن کیس کی سماعت ہوئی ،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کیس کی سماعت کی، ہسپتال میں ڈیوٹی چھوڑ کر عدالت آنے والے ڈاکٹرز پر اسلام آبادہائیکورٹ برہم ہو گئی،عدالت نے ڈاکٹرز کو سماعت چھوڑ کر واپس ڈیوٹی پر ہسپتال جانے کی ہدایت کردی۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ منع کرنے کے باوجود ڈاکٹرز کیوں آجاتے ہیں،کورونا کے دوران ڈاکٹرز کی ہسپتال میں ضرورت ہے ،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ وکلا کی موجودگی میں ڈاکٹرز کو اپنی ڈیوٹی چھوڑ کر عدالت آنے کی کیا ضرورت ہے ؟۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ کے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ کورونا میں فرنٹ لائن پر ہونے کی وجہ سے ڈاکٹرز کی زیادہ قدر کرتے ہیں ،اسلام آباد ہائیکورٹ نے کیس کی سماعت8 جولائی تک ملتوی کردی۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -