کورونا فری سرٹیفکیٹ ملتے ہی قومی کرکٹرز نے ٹریننگ کا آغاز کر دیا

کورونا فری سرٹیفکیٹ ملتے ہی قومی کرکٹرز نے ٹریننگ کا آغاز کر دیا
کورونا فری سرٹیفکیٹ ملتے ہی قومی کرکٹرز نے ٹریننگ کا آغاز کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) برطانوی سرزمین پر پہنچنے والے پاکستانی کرکٹرز نے کورونا فری سرٹیفکیٹ ملتے ہی بیٹ اور بال تھام لیا ہے اور چیلنج سے بھرپور سیریز کیلئے ٹریننگ کا آغاز کر دیا ہے، پاکستان میں پہلی کورونا ٹیسٹنگ میں 10 کرکٹرز اور مساجر ملنگ علی کی رپورٹس مثبت آئی تھیں البتہ 18 کرکٹرز اور 11 سپورٹ سٹاف اراکین کا نتیجہ منفی آنے پر انہیں اتوار کے روز انگلینڈ بھیجا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق وورسٹر میں موجود 21 کھلاڑیوں اور 13ٹیم مینجمنٹ اراکین کے ٹیسٹ منفی آئے ہیں جس پر قومی کھلاڑیوں کو ٹریننگ کی اجازت مل گئی ہے، پہلے 20 کرکٹرز اور 12 معاون سٹاف ارکان کے نتائج سامنے آئے، بعد ازاں تاخیر سے سکواڈ کو جوائن کرنے والے ظفر گوہر اور فزیو کلف ڈیکن کے ٹیسٹ کی رپورٹس بھی منفی آ گئیں، وورسٹر میں موجود قومی کرکٹرز کو بائیو سیکیورٹی پر لیکچر دیا گیا، بطور بائیو سیکیورٹی افسر ساتھ جانے والے پی سی بی کے ڈائریکٹر میڈیسن اینڈ سپورٹس سائنسز ڈاکٹر سہیل سلیم نے ایس او پیز پر بریفنگ دی، ٹیسٹ کپتان اظہر علی نے کھلاڑیوں کو احتیاطی تدابیر کے ساتھ ٹریننگ شیڈول اور طریقہ کار کا بتایا، لیکچرز کے دوران کھلاڑی اور آفیشلز سٹیڈیم کے سٹینڈز میں سماجی فاصلے کے ساتھ بیٹھے، سب نے ماسک پہن رکھے تھے۔

ٹیسٹ منفی آنے کے بعد کورونا فری قرار پانے والے کرکٹرز نے ووسٹر گراﺅنڈ کے بائیو سیکیور ماحول میں لہو گرمانے کا سلسلہ شروع کیا، مقامی وقت کے مطابق ڈھائی بجے شروع ہونے والے سیشن میں کھلاڑیوں نے ہلکی ٹریننگ سے آغاز کیا، رننگ کے بعد فزیو کلف ڈیکن نے مختلف ڈرلز کرواکے جسمانی استعداد بہتر بنانے کی کوشش جاری رکھی۔ نیٹ سیشن میں اظہر علی، بابر اعظم، اسد شفیق و دیگر نے صلاحیتیں نکھاریں، بیٹنگ کوچ یونس خان نے قیمتی مشورے دئیے، محمد عباس سمیت دیگر باﺅلرز نے بھی ہاتھ پاﺅں کھولے، نوجوان پیسرز باﺅلنگ کوچ وقار یونس کی خاص توجہ کا مرکز بنے، سابق کپتان نے نسیم شاہ کو انگلش کنڈیشنز میں بہتر کارکردگی کے گر سکھائے۔

دوسری جانب یاسر شاہ نے سپن باﺅلنگ کوچ مشتاق احمد کے تجربے کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے لائن اور لینتھ پر کام کیا۔ خوشگوار موسم میں ٹریننگ کی نگرانی کرتے ہوئے ہیڈکوچ وچیف سلیکٹر مصباح الحق بھی بڑے مطمئن نظر آئے۔ یاد رہے کہ مارچ میں لاک ڈاﺅن کے بعد قومی کرکٹرزباقاعدہ ٹریننگ نہیں کر سکے، دورہ انگلینڈ کی تیاری کیلئے پاکستان میں تربیتی کیمپ کورونا وائرس کا پھیلاؤدیکھتے ہوئے منسوخ کردیا گیا تھا۔

مزید :

کھیل -