پرنسپل کی خاتون کے ساتھ نشہ آور دوا دے کر زیادتی، حاملہ ہوئی تو انتہائی گھناونا کام کردیا

پرنسپل کی خاتون کے ساتھ نشہ آور دوا دے کر زیادتی، حاملہ ہوئی تو انتہائی ...
پرنسپل کی خاتون کے ساتھ نشہ آور دوا دے کر زیادتی، حاملہ ہوئی تو انتہائی گھناونا کام کردیا

  

پٹنہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی ریاست بہار میں کالج پرنسپل نے خاتون ملازمہ کو نشیلی دوا دے کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، خاتون لاک ڈاون کے دوران حاملہ ہوئی تو پرنسپل نے اسے اسقاط حمل کرانے کیلئے کہا اور ایسا نہ کرنے کی صورت میں جان سے مارنے کی دھمکی دی۔

بہار کے بیگو سرائے میں آیور ویدک کالج کی کنٹریکٹ ملازمہ نے پولیس کو پرنسپل کے خلاف کارروائی کی درخواست دی ہے۔ خاتون کے مطابق وہ کالج میں کنٹریکٹ پر اٹینڈنٹ کی نوکری کرتی ہے، ایک روز پرنسپل نے اسے اپنے گھر کھانا بنانے کیلئے آنے کو کہا، انکار پر اسے نوکری سے نکالنے کی دھمکی دی جس پر وہ صبح شام پرنسپل کے گھر کھانا بنانے لگی۔ ایک دن پرنسپل نے اسے نشیلی دوائی دے کر اس کی آبروریزی کردی۔

خاتون کے مطابق جب اسے تین گھنٹے بعد ہوش آیا تو پرنسپل نے اسے شادی کا جھانسہ دے کر چپ کرادیا، پرنسپل کی جانب سے اس کے ساتھ زیادتی کا سلسلہ 3 سال تک چلتا رہا، لاک ڈاون کے دوران وہ حاملہ ہوگئی۔ خاتون نے پرنسپل سے شادی کے حوالے سے بات کی تو اس نے آگے سے اسقاط حمل کا مشورہ دیا اور ایسا نہ کرنے کی صورت میں جان سے مارنے کی دھمکیاں دینے لگا۔

مزید :

جرم و انصاف -