سینئر تجزیہ کار ایاز امیر پر نامعلوم افراد کا حملہ، تشدد کا نشانہ بنایا گیا، موبائل فون چھین لیا

سینئر تجزیہ کار ایاز امیر پر نامعلوم افراد کا حملہ، تشدد کا نشانہ بنایا گیا، ...
سینئر تجزیہ کار ایاز امیر پر نامعلوم افراد کا حملہ، تشدد کا نشانہ بنایا گیا، موبائل فون چھین لیا
سورس: Twitter

  

لاہور  (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر تجزیہ کار ایاز امیر پر نامعلوم افراد نے حملہ کرکے انہیں تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔ نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق نامعلوم افراد نے ایاز امیر پر حملہ کیا  اور انہیں تشدد کا نشانہ بنایا۔ نامعلوم افراد نے ایاز امیر سے پرس اور موبائل فون چھین لیا۔ اس کے علاوہ ان کے ڈرائیور کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور اس کا بھی موبائل فون چھین لیا گیا۔

ایاز امیر نے اس حوالے سے بتایا کہ وہ جیسے ہی دنیا نیوز کے دفتر سے نکلنے لگے تو ایک گاڑی بڑے ہی بے ڈھنگ انداز میں ان کی گاڑی کے آگے رکی جس میں سے ایک شخص اترا اور اس نے ڈرائیور پر تشدد شروع کردیا۔ جب انہوں نے تکرار کی تو مزید لوگ آگئے ، پہلے انہوں نے مجھے گاڑی میں تشدد کا نشانہ بنایا جس کے بعد گاڑی سے نکال کر زمین پر لٹا کر تشدد کیا گیا۔ ایاز امیر نے بتایا کہ  ایک حملہ آور نے فیس ماسک لگا رکھا تھا ۔ جس جگہ پر حملہ کیا گیا وہ ایک رش والی جگہ ہے جہاں لوگ بڑی تعداد میں جمع ہوگئے جس پر وہ افراد اپنی گاڑی میں فرار ہوگئے۔

تجزیہ کار مظہر عباس کے مطابق ایاز امیر پر اس وقت حملہ کیا گیا جب وہ پروگرام کرکے دفتر سے باہر نکل رہے  تھے۔ انہیں ایبٹ روڈ پر پانچ سے چھ افراد نے گاڑی روک کر تشدد کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ ایاز امیر پر حملہ کرکے وارننگ دینے کی کوشش کی گئی ہے، صحافی برادری کا لاہور میں اجلاس ہونے جا رہا ہے جس میں اس حوالے سے لائحہ عمل دیا جائے گا۔

سینئر صحافی مجیب الرحمان شامی نے ایاز امیر پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت کیلئے چیلنج ہے کہ وہ ملزمان کا سراغ لگا کر انہیں قرار واقعی سزا دے۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -علاقائی -پنجاب -لاہور -