ایک سے زائد نشستوں پر کامیاب اراکین اسمبلی اضافی نشستوں سے دستبردار، مولانا فضل الرحمان سوچ بچار میں پڑ گئے

ایک سے زائد نشستوں پر کامیاب اراکین اسمبلی اضافی نشستوں سے دستبردار، مولانا ...
ایک سے زائد نشستوں پر کامیاب اراکین اسمبلی اضافی نشستوں سے دستبردار، مولانا فضل الرحمان سوچ بچار میں پڑ گئے

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) عام انتخابات میں ایک سے زائد نشستوں پر کامیاب ہونے والے قومی و صوبائی اسمبلیوں کے اراکین اضافی نشستوں سے دستبردار ہو گئے ہیں جبکہ مولانا فضل الرحمان ابھی کوئی فیصلہ نہیں کر سکے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مسلم لیگ ن کے سربراہ میاں نواز شریف نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120 اور این اے 68 پر کامیابی حاصل کی تھی تاہم انہوں نے این اے 120 کی نشست پاس رکھنے کا فیصلہ کرتے ہوئے این اے 68 سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے رہنماءمیاں شہباز شریف نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 129 ، صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 159، پی پی 161 اور پی پی 247 سے کامیابی حاصل کی تھی جبکہ انہوں نے پی پی 159 کی نشست پاس رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اور این اے 129، پی پی 161 اور پی پی 247 سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ مسلم لیگ ن ہی کے مرکزی رہنماءچوہدری نثار علی خان پی پی 6 سے دستبردا رہوئے ہیں جبکہ خواجہ آصف قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 110 کی نشست پاس رکھتے ہوئے صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 123 سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ خیبر پختونخواہ اسمبلی کے نو منتخب وزیراعلیٰ اور تحریک انصاف کے رہنماءپرویز خٹک این اے 5 کی نشست سے دستبردار ہوئے ہیں، خیبر پختونخواہ اسمبلی کے سپیکر اور تحریک انصاف ہی کے رہنماءاسد قیصر نے این اے 13 سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماءامیر حیدر ہوتی صوبائی اسمبلی کی نشست پی کے 23 سے دستبردار ہوگئے ہیں۔ جمعیت علمائے اسلام (ف ) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کر سکے جس کے باعث وہ آج قومی اسمبلی کے رکن کی حیثیت سے حلف بھی نہیں اٹھا سکے۔ جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 24، این اے 25 اور این اے 27 سے کامیاب ہوئے تھے جس میں انہیں کسی ایک نشست کا انتخاب کرنا ہے اور دو نشستوں سے دستبردار ہونا ہے تاہم وہ کون سی نشست اپنے پاس رکھیں گے اس کا فیصلہ وہ نہیں کر سکے۔ مسلم لیگ ق کے مونس الٰہی نے پی پی 110 کی نشست پاس رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اور پی پی 118 سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے رہنماءحمزہ شہباز شریف پی پی 142 سے دستبردار ہوئے ہیں۔ صدر الدین شاہ نے این اے 216 کی نشست پاس رکھتے ہوئے این اے 235 سے نشست چھوڑ دی ہے۔ تحریک انصاف کے صدر جاوید ہاشمی قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 149 کی نشست رکھتے ہوئے این اے 148 سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے محمود خان اچکزئی تاحال کوئی فیصلہ نہیں کر سکے۔

مزید : قومی