پنجاب کے 12 اضلاع میں سٹیویا کی تجرباتی کاشت مکمل کر لی گئی ، حافظ محمد اکرم

پنجاب کے 12 اضلاع میں سٹیویا کی تجرباتی کاشت مکمل کر لی گئی ، حافظ محمد اکرم

  

 راولپنڈی (اے پی پی )زرعی ماہرین نے کہا ہے کہ سٹیویا پلانٹ چینی کا بہترین نعم البدل ہے اور سٹیویا کی وسیع پیمانے پر کاشت، پروسیسنگ، مارکیٹنگ اور استعمال وقت کی ضرورت ہے ۔ ماہرین نے کہا کہ سٹیویا کی کاشت کو فروغ دے کر کاشتکار فی ایکڑ 4 لاکھ 70 ہزار روپے سالانہ منافع کما سکتے ہیں ۔چینی کے نعم البدل کثیر الفوائد پودے کی کاشت کے فروغ خصوصی سٹیویا پروجیکٹ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر حافظ محمد اکرم نے کہا کہ پنجاب کے 12 اضلاع میں سٹیویا کی تجرباتی کاشت کا مرحلہ کامیابی سے مکمل کرلیا گیا ہے۔ اور اگلے مرحلے میں اس کی وسیع پیمانے پر تجارتی کاشت کے فروغ کے لئے لائحہ عمل مرتب کیا جارہا ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ سٹیویا کے پتے چینی سے 15 گنا زیادہ میٹھے جبکہ اس کا رس (سٹویوسائیڈ) چینی سے تقریباً 300 گنا زیادہ میٹھا ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ سٹیویا کے پتوں میں پروٹین کی مقدار 13 فیصد جبکہ نشاستہ کی مقدار 53 فیصد پائی جاتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سٹیویا کی کاشت کیلئے جدید پیداواری ٹیکنالوجی بھی دریافت کرلی گئی ہے جس کے تحت اب سٹیویا کی کامیاب کاشت بذریعہ بیج ممکن ہے۔ کاشتکار چھوٹے پیمانے پر سٹیویا کی کاشت کا تجربہ حاصل کریں اور بتدریج اس کی کاشت کو وسیع پیمانے پر کریں کیونکہ سٹیویا کی کاشت سے کاشتکار سالانہ 880,000 روپے فی ایکڑ آمدن جبکہ 470,000روپے سے زیادہ خالص منافع کماسکتے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ سٹیویا پلانٹ کی طبی اہمیت بھی ہے اور جراثیم کش ہونے کے باعث ٹوتھ پیسٹ میں بھی استعمال کیا جاتا ہے اور کیلشیم کی مقدار زیادہ ہونے کی وجہ سے عورتوں اور بچوں کی ہڈیوں کی نشوونما کے لیے مفید ہونے کے علاوہ اس کے پتوں کا عرق کینسر کی ادویات بنانے میں بھی استعمال ہوتاہے۔

مزید :

کامرس -