شام ،سرکاری فوج کی ہیلی کاپٹرز کے ذریعے بمباری،72افراد جاں بحق متعدد زخمی

شام ،سرکاری فوج کی ہیلی کاپٹرز کے ذریعے بمباری،72افراد جاں بحق متعدد زخمی

  

حلب(این این آئی) شام کے شہر حلب کے دو مختلف علاقوں میں بشارت اسد کی سرکاری فوج نے ہیلی کاپٹروں کے ذریعے شہریوں پر بمباری کردی جس میں 72 شامی شہری جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے شام میں انسانی حقوق کے لئے کام کرنے والی برطانوی تنظیم کے مطابق سرکاری فوجوں کی جانب سے ہیلی کاپٹروں کے ذریعے گرائے جانے والے متعدد بیرل بم دھماکوں میں 72 شامی شہری جاں بحق اور سینکڑوں زخمی ہوگئے ہیں۔تنظیم کے ڈائریکٹر عادل رحمان کے مطابق جہادیوں کے زیر قبضہ علاقے الباب کی مارکیٹ میں ہونے والے اس قتل عام میں 60مرد شہری ہلاک ہوئے ہیں۔انھوں نے بتایا کہ الباب کے علاقے میں قائم الحیل مارکیٹ میں شہریوں کی کثیر تعداد خریداری کیلئے آتی ہے اور اسی وجہ سے بمباری کے باعث اس قدر ہلاکتیں ہوئی ہیں۔برطانوی تنظیم کے سربراہ نے کہا کہ الشائر میں بھی ہونے والی اسی طرح کی بمباری میں ایک ہی خاندان کے 8 افراد سمیت 12 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔الشائر کے علاقے سے جنگجوں کو نکالنے میں سرکاری فوج کی مدد کرنے والے سول ڈیفنس کے رضا کار شہود حسین کا کہنا ہے کہ بم دھماکوں کی شدت سے معلوم ہوتا تھا کہ ’عمارتیں آپس میں ٹکرا جائیں‘گی۔شامی انقلاب جنرل کمیشن کے سرگرم گروپ کے مطابق بشارت اسد کی جانب سے ہونے والا مذکورہ حملہ 2015 ء سے جاری جنگ کے آغاز سے اب تک سب سے بڑا حملہ ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق شام میں کام کرنے والی انسانی حقوق کی تنظیم نے بتایا کہ القاعدہ اور اس کے اتحادی جنگجو گروں کی جانب سے ادلب کے علاقوں میں سرکاری فوج کے انخلاء کے باعث کنٹرول حاصل کرنے کے بعد یہاں بھی شامی فوجوں نے بیرل بم برسائے تھے۔شامی فوجوں کی زمینی جنگ میں مستقل شکست کے بعد جنگجوؤں سے نمٹنے کیلئے اس قسم کی فضائی کارروائیاں اب ایک عام سے بات ہوگئی ۔

مزید :

عالمی منظر -