خواتین کے گاڑی چلانے پر پابندی ناقابل قبول ہے،برطانوی وزیر تعلیم نکی مورگن

خواتین کے گاڑی چلانے پر پابندی ناقابل قبول ہے،برطانوی وزیر تعلیم نکی مورگن

  

لندن(آئی این پی) برطانیہ کی وزیر تعلیم نکی مورگن نے بچوں کو کار چلا کر سکول لے جانے والی خواتین پر یہودی تعلیمی ادارے کی جانب سے عائد پابندی کو ناقابل قبول قرار دیدیا۔ عالمی میڈیاکے مطابق برطانوی وزیر تعلیم نکی مورگن کا کہنا ہے کہبچوں کو کار چلا کر سکول لے جانے والی خواتین کے گاڑی چلانے پر پابندی ناقابل قبول ہے۔یہ سکول شمالی لندن میں واقع ہے اور اس کا تعلق یہودیوں کے انتہائی سخت عقیدے کے حامل فرقہ بیلز سے ہے۔ اس فرقے کا قیام انیسویں صدی کے اوائل میں یوکرین میں عمل آیا تھا اور اس کے پیروکار ہیریڈی یہودیت کو مانتے ہیں۔ سکول نے ایک پیغام میں والدین کو خبردار کیا تھا ۔

کہ ایسے بچوں کو سکول کے اندر داخل نہیں ہونے دیا جائے گا جنہیں ان کی مائیں کار چلا کر سکول لائیں گی۔ پیغام میں لکھا تھا کہ خواتین کا گاڑی چلانا ہمارے معاشرے میں شائشتگی کے قوانین کے منافی ہے۔ بیلز برادری کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس انتباہ کو غلط طور پر سمجھے جانے سے صدمہ ہوا۔ برطانوی وزارت داخلہ کے مطابق انفرادی واقعات پر تبصرہ نامناسب ہے البتہ حکومت اس بات پر قائل ہے کہ ملک میں سب برابر ہیں اور ہر شخص کو مرضی کے مطابق زندگی گزارنے کی آزادی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -