تبدیلی آنہیں رہی ، آگئی ہے ، خیبرپختونخواہ میں حکومت او ر اپوزیشن کیلئے الگ الگ قانون

تبدیلی آنہیں رہی ، آگئی ہے ، خیبرپختونخواہ میں حکومت او ر اپوزیشن کیلئے الگ ...
تبدیلی آنہیں رہی ، آگئی ہے ، خیبرپختونخواہ میں حکومت او ر اپوزیشن کیلئے الگ الگ قانون

  

پشاور، ڈیرہ اسماعیل خان (مانیٹرنگ ڈیسک) خیبرپختونخواہ حکومت اور تحریک انصاف کا دعویٰ ہے کہ پولیس غیرسیاسی ہے لیکن ان دعوﺅں کی قلعی اس وقت کھلی جب ایک ہی صوبے میں سابق صوبائی وزیرعدالتوں میں پیش ہورہے ہیں لیکن دومقدمات درج کے باوجود ہ وزیرآزاد ہیں اور پولیس پروٹوکول میں اسلام آباد روانہ ہوگئے ۔

تفصیلات کے مطابق بلدیاتی انتخابات میں جیت کا جشن منانے کے دوران فائرنگ سے پی ٹی آئی کارکن حبیب اللہ ہلاک ہوگیا جس کا مقدمہ مقتول کے والد کی مدعیت میں درج کرکے عوامی نیشنل پارٹی کے سیکریٹری جنرل میاں افتخار حسین کو گرفتار کرلیاتاہم عدالت میں مقتول کے والد نے میاں افتخار حسین کیخلاف مقدمہ کرانے کی تردید کردی ، اب اُنہیں عدالت نے دوہفتوں کے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کرنے کا حکم دیدیا جبکہ ریسٹ ہاﺅس نوشہرہ کو سب جیل قراردیئے جانے کی اطلاعات ہیں جہاں میاں افتخار حسین کو رکھاجائے گا۔

دوسری طرف بلدیاتی الیکشن کے موقع پر مبینہ طور پرپولنگ بیگ لے جاتے ہوئے پی ٹی آئی کے صوبائی وزیرعلی امین گنڈاپور کی گاڑی کو شہریوں نے گھیرلیا جن کے نرغے سے پولیس نے علی امین گنڈاپور کو نکال کر بحفاظت گھر پہنچادیا ، اُن کیخلاف مخالف امیدو ار ملک سعید کی مدعیت میں کارسرکار میں مداخلت اور قتل کی دھمکیوں کے دومقدمات درج کرلیے گئے ہیں جبکہ صوبائی وزیرکے اسلام آباد چلے جانے کی اطلاعات ہیں ۔ سابق وزیرکے برعکس صوبائی وزیرکیخلاف کارروائی نہ ہونے پر ملک سعید کے حامیوں نے احتجاج کیا اور سرکلر روڈ بلاک کرکے حکومت کیخلاف نعرہ بازی کی ،پی ٹی آئی امیدواران کے بینرز پھاڑدیئے ۔

مزید :

قومی -