دنیا بھر میں لوگوں کی نجی زندگی میں مداخلت کے امریکی قانون کی مدت ختم ، این ایس اے نے ٹیلی فونک ریکارڈنگ کے سرور بند کردیئے

دنیا بھر میں لوگوں کی نجی زندگی میں مداخلت کے امریکی قانون کی مدت ختم ، این ...
دنیا بھر میں لوگوں کی نجی زندگی میں مداخلت کے امریکی قانون کی مدت ختم ، این ایس اے نے ٹیلی فونک ریکارڈنگ کے سرور بند کردیئے

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا بھر میں ٹیلی فون کی خفیہ نگرانی ،ریکارڈ نگ سے متعلق امریکہ قانون کی معیاد ختم ہوگئی ہے جس کے بعد امریکہ کی نیشنل سیکیورٹی ایجنسی نے نگرانی کا کام ختم کرکے اپنا سرور بند کردیاہے ۔ وائیٹ ہاﺅس نے اِسے ’غیرذمہ دارانہ بھول قراردیا۔

تفصیلات کے مطابق پٹریاٹ ایکٹ کی اہم دفعات میں سینٹ سے توسیع کی کوششیں ناکام ہوگئی ہیں جس کے بعد قانون کی معیاد ختم ہونے کے بعد این ایس اے نے ٹیلی فونک ریکارڈنگ و نگرانی کا کام بند کردیا۔ اتوار کی شب امریکی سینیٹرز نے امریکہ کے فریڈم ایکٹ پر بحث و مباحثہ بھی کیا کہ آیا اس میں توسیع کی جائے یا اس کی جگہ ایسا قانون لایا جائے جس میں کثیر تعداد میں فون کے اعداد و شمار اکٹھا کرنے کی اجازت نہ ہو تاہم مقررہ وقت کے اندر کسی بھی ایک نقطے پر اتفاق رائے نہیں ہو سکا۔

وائٹ ہاوس نے اپنے ردِعمل میں سینٹ کی ناکامی کو غیر ذمہ دارانہ بھول قرار دیتے ہوئے کہاکہ سینیٹرز کو اپنی جانبداری کو ایک جانب رکھنا چاہیے اور تیزی سے اقدام کرنا چاہیے، امریکی عوام اس سے کم کے حق دار نہیں،یہ اتناہی اہم ہے جتنی قومی سلامتی ۔اس سے قبل صدر براک اوباما نے متنبہ کیا تھا کہ اگر اس قانون کی میعاد ختم ہوئی تو امریکہ خطرے میں پڑ سکتا ہے۔

بی بی سی نے امکان ظاہر کیاہے کہ آئندہ چند دنوں میں نیا قانون پاس ہو جائے گا تاہم اس میں تاخیر ریپبلکن اور صدارت کے لیے پرامید سینیٹر رینڈ پال کی کامیابی سمجھا جائے گا، ایجنسی نے ایکٹ کی معیاد ختم ہونے سے پہلے ہی اپنے سرور کو بند کرناشروع کردیاتھا اور اب بند سرور کو آن کرنے میں ایک دن وقت لگ سکتاہے ۔

یادرہے کہ اِسی ایکٹ کے تحت ہی امریکی نیشنل سیکیورٹی ایجنسی اپنے شہریوں سمیت دنیا بھر کی بڑی شخصیات کی ٹیلی فون کالزریکارڈ کرچکی ہے جس کی وجہ سے اُسے سخت تنقید کا سامنابھی کرناپڑا۔

مزید :

بین الاقوامی -