سڑک پر اپنے جسم کو تیر سے نشانہ بنوانے کیلئے یہ لڑکی لوگوں کی منتیں کرتی ہے، اس کام پر کیوں مجبورہوئی، وجہ ایسی دردناک کہ آپ اس کے جذبے کی داد دیئے بغیر نہ رہ سکیںگے

سڑک پر اپنے جسم کو تیر سے نشانہ بنوانے کیلئے یہ لڑکی لوگوں کی منتیں کرتی ہے، ...
سڑک پر اپنے جسم کو تیر سے نشانہ بنوانے کیلئے یہ لڑکی لوگوں کی منتیں کرتی ہے، اس کام پر کیوں مجبورہوئی، وجہ ایسی دردناک کہ آپ اس کے جذبے کی داد دیئے بغیر نہ رہ سکیںگے

  


بیجنگ (نیوز ڈیسک ) کوئی ذی ہوش شخص کسی سے اپنے جسم پر تیر برسانے کی درخواست کیسے کر سکتا ہے ، لیکن زندگی کے مصائب و آلام انسان کو اس حال کو بھی پہنچا سکتے ہیں کہ وہ لوگوں سے فریاد کرنے لگے کہ اس پر تیر چلائے جائیں۔ یہ افسوسناک منظر چین کے ہانگ زو شہر میں دیکھا گیا، جہاں مشہور وولیان سکوائر میں کھڑی ایک نوجوان لڑکی لوگوں سے فریاد کر رہی تھی کہ وہ اسے تیر سے نشانہ بنائیں۔

لڑکی دیوار کے ساتھ انسانی ہدف بن کر کھڑی تھی اور اس نے اپنے پاس تیر کمان کا اہتمام بھی کر رکھا تھا۔ وہ ایک تیر چلانے کے عوض 10 یوان (تقریباً150 پاکستانی روپے ) طلب کر رہی تھی۔ لوگوں نے اس لڑکی کوپاگل جان کر پولیس کو اطلاع کر دی۔ پولیس نے جب اسے گرفتار کر کے معاملے کی تحقیق کی تو پتہ چلا کہ وہ پاگل نہیں ہے بلکہ اپنی کینسر سے مرتی ہوئی بہن کے علاج کے لئے رقم کی متلاشی ہے، جسے رقم اکٹھی کرنے کا کوئی اور طریقہ نہ سوجھا تو خود کو لوگوں کی تفریح کا سامان بنا دیا۔

’گیم آف تھرونز‘ میں کام کرنے والی مسلم اداکارہ کا شرمناک ماضی، پردہ اٹھاتو دنیا میں ہنگامہ برپاہوگیا

اکیس سالہ لڑکی کا نام جی جیانلی ہے اور اس کی بڑی بہن کئی سال سے لیوکیمیا نامی کینسر میں مبتلا ہے۔ نیوز ویب سائٹ wwwnکے مطابق جیانلی کی بہن کے علاج کیلئے 76 ہزار ڈالر (تقریباً76 لاکھ پاکستانی روپے ) کی ضرورت ہے، لیکن اس کے پاس اتنی بڑی رقم اکٹھی کرنے کا کوئی وسیلہ موجودنہیں۔ وہ اپنی کینسر زدہ بہن کا واحد سہارا ہے، کیونکہ اس کا والد پہلے ہی فوت ہو چکا ہے اور ماں عمر رسیدہ اور بیمار ہے۔

پولیس کا کہنا تھا کہ لڑکی شدید ذہنی پریشانی میں مبتلا ہے اورخود کو نقصا ن پہنچا سکتی ہے لہٰذا اسے تحویل میں لے لیا گیا، البتہ یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ اس بیچاری کی مدد کیلئے بھی کوئی کوشش کی گئی یا نہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس