سائنس اور ٹیکنالوجی کے فروغ اور ترقی سے غربت اور پسماندگی کا خاتمہ ہو گا ، ممنون حسین

سائنس اور ٹیکنالوجی کے فروغ اور ترقی سے غربت اور پسماندگی کا خاتمہ ہو گا ، ...

اسلام آباد (آن لائن) صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ سائنس اور ٹیکنالوجی کے فروغ اور ترقی سے غربت اور پسماندگی کا خاتمہ ہو گا آج مسلم ممال ترقی کی دوڑ میں پیچھے رہنے کی وجہ سائنس و ٹیکنالوجی میں جدت نہ لانے سے ہے مسلم ممال اپنی پیداوار کا صرف 2.4 فیصد سائنس و ٹیکنالوجی پر چرچ کر رہے ہیں او آئی سی ممالک مل کر ہی دنیا میں پائیدار ترقی کے اہداف حاصل کر سکتے ہیں کامسٹیک اپنے قیام سے ہی سائنس و ٹیکنالوجی کے فروغ پر کام کر رہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز اسلام آباد میں منعقد ہونے والی کامسٹیک جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا صدر مملکت نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ جلد غربت اور پسماندگی کا خاتمہ ہو جس کے لئے ہمیں سائنس و ٹیکنالوجی کو فروغ دینا ہو گا سائنس و ٹیکنالوجی میں جدت نہ لانے کی وجہ سے مسلم ممالک پیچھے ہیں مسلم ممالک اپنی پیداوار کا صرف 2.4 فیصد سائنس و ٹیکنالوجی پر خرچ کر رہے ہیں ۔ ہم اپنے ملکوں میں خوراک و پانی کے محفوظ ذخائر سے امن اور ترقی کو فروغ دیا جا سکتا ہے ہمیں ترقی کی ڈور میں آگے نکلنے کے لئے سائنس و ٹیکنالوجی پر خصوصی توجہ دیتے ہوئے ضروری اقدامات کرنے ہوں گے اور سائنس و ٹیکنالوجی کو درکار تمام وسائل کو بروئے کار استعمال میں لانا ہو گا ۔ سائنس و ٹیکنالوجی میں پسماندگی کے باعث ہ م سائنسدان پیدا نہیں کر سکے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کامسٹیک اپنے قیام سے لے کر آج تک سائنس و ٹیکنالوجی کے فروغ پر کام کر رہی ہے کامسٹیک کا 10 سالہ منصوبہ ایک اہم کاوش ہے منصوبے کے تحت تکنیکی اداروں کی صلاحیت میں اضافہ کیا جا رہا ہے توقع ہے کہ یہ اجلاس رکن ملکوں کو بیدار کرنے کا ذریعہ ثابت ہو گا ۔ او آئی سی ممالک مل کر بھی پائیدار ترقی کے اہداف حاصل کر سکتے ہیں اپنے خطاب کے آخر میں صدر مملکت نے اجلاس کے شرکاء سے وزیر اعظم کی جد صحت یابی کے لئے دعا کی اپیل کی اور کہا کہ انشاء اللہ وزیر اعظم جلد صحت یاب ہو کر ملک کی بھاگ دوڑ سنبھالنے کے لئے آئیں گے ۔

مزید : علاقائی